معروف صحافی نے عمران خان کے خلاف سیتا وائٹ کیس لانے پرسابق چیف جسٹس کو کھری کھری سنا دیں

افتخارچوہدری کو سیاست میں اتنا نہیں گرنا چاہئے، اگر الیکشن لڑنا ہے تو سیدھی طرح لڑیں۔ جب ان کے اپنے بیٹے پر الزام لگا تو انہوں نے بیٹے سے متعلق خود ہی بنچ بنالیا اور فیصلہ سنادیا،معروف صحافی عارف نظامی کا تجزیہ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان منگل جون 11:12

معروف صحافی نے عمران خان کے خلاف سیتا وائٹ کیس لانے پرسابق چیف جسٹس ..
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔19جون 2018ء) معروف صحافی عارف نظامی کا کہنا ہے کہ سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری عمران خان کے خلاف جو سیتا وائٹ کیس لا رہے ہیں تو ان کو ایسا نہیں کرنا چاہئیے۔سیاست میں کسی کو اتنا نہیں گرنا چاہئیے۔عارف نظامی کا کہنا ہے کہ یہ عمران خان کی جوانی کی لغزش تھی۔۔عمران خان پہلے تو اس بات سے انکار کرتے رہے کہ ان کی کوئی بیٹی ہے لیکن نوے کی دہائی میں انہوں نے لاس اینجلس کے ہائی کورٹ میں یہ بات تسلیم کی ہے ان کی بیٹی ہے۔

جب کہ اب عمران خان کی اس بیٹی کو جمائما سنبھال رہی ہیں۔لیکن اس تمام صورتحال میں اس بچی کا کوئی قصور نہیں ہے کہ اس کو سیاست میں گھسیٹا جا رہا ہے۔عارف نظامی کا کہنا تھا کہ اگر افتخار چوہدری نے الیکشن لڑنا ہے تو وہ سیدھی طرح لڑیں کیونکہ اس طرح کی چیزیں سامنے لا کر وہ الیکشن نہیں جیت سکتے۔

(جاری ہے)

افتخارچوہدری کو اتنا نہیں گرنا چاہئے، اگر الیکشن لڑنا ہے تو سیدھی طرح لڑیں۔

دوسری طرف جب ان کے اپنے  بیٹے پر الزام لگا تو انہوں نے بیٹے سے متعلق خود ہی بنچ بنالیا اور فیصلہ سنادیا۔یاد رہے سابق چیف جسٹس پاکستان افتخار محمد چوہدرینے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے خلاف مبینہ طور پر ان کی اور دولت مند برطانوی خاتون سیتا وائٹ کی ناجائز اولاد کے معاملے پرسپریم کورٹ میں آرٹیکل 1-62 ایف کے تحت درخواست دائر کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ افتخار چوہدری کا کہنا تھا کہ عمران خان کیخلاف سنگین الزامات موجود ہیں کہ ان کا ایک ’’Love Child‘‘ ہے، مجھے نہیں معلوم اردو میں ان الفاظ کو کیسے بیان کیا جائے کیونکہ ہماری بیٹیاں بھی یہ بات سن رہی ہوں گی۔ اگرچہ عمران خان پاکستان میں اس بیٹی کو قبول نہیں کرتے لیکن پاکستان سے باہر وہ اسے قبول کرتے ہیں۔