سفاکیت کی انتہا

والدہ کے آشنا نے محبوبہ کی بیٹی کو ہی جنسی ہوس کا نشانہ بنا ڈالا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین منگل جون 16:25

سفاکیت کی انتہا
بھارت(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 19 جون 2018ء) : بھارتی شہر حیدر آباد میں سفاکیت کی اس وقت انتہا ہوئی جب والدہ کے آشنا نے اپنی محبوبہ کی بیٹی کو جنسی ہوس کا نشانہ بنا ڈالا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارتی شہر حیدر آباد میں ایک خاتون کے آشنا نے اپنی جنسی ہوس کو پورا کرنے کے لیے محبوبہ کی 12 سالہ بیٹی کو ہی نشانہ بنا ڈالا۔ یہ واقعہ میرپت پولیس اسٹیشن کی حدود میں پیش آیا۔

اس واقعہ کا پردہ تب فاش ہوا جب 12 سالہ بچی نے بارہا معدے میں تکلیف کی شکایت کی۔ پولیس کو موصول ہوئی اطلاعات کے مطابق متاثرہ بچی کی والدہ نے اپنے شوہر سے علیحدگی کے بعد 12 سال قبل اپنے بوائے فرینڈ کے ساتھ رہنا شروع کر دیا۔ خاتون کے آشنا نے پہلی مرتبہ اس کی بیٹی کو تب نشانہ بنایا جب وہ گھر سے باہر اور 12 سالہ بیٹی گھر کے اندر اکیلی تھی۔

(جاری ہے)

ملزم رمیش نشے میں دھت ہو کر گھر لوٹا اور 12 سالہ بچی کو اکیلی پا کر اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ رمیش نے متاثرہ بچی کو دھمکایا بھی اور والدہ کو اس سے متعلق کچھ بھی بتانے سے منع کر دیا۔ اس کے بعد ملزم نے کئی مرتبہ بچی کو اپنی جنسی ہوس کا نشانہ بنایا لیکن متاثرہ بچی نے ملزم کے ڈر کی وجہ سے اپنی والدہ کو کچھ بھی بتانے کی ہمت نہ کی۔

کئی دنوں سے معدے کی تکلیف کی شکایت کرنے پر 12 سالہ بچی کو اسپتال لے جایا گیا جہاں معلوم ہوا کہ بچی سے جنسی زیادتی کی جاتی رہی ہے۔رمیش نے پہلے پہل تو صحت جُرم سے انکار کیا لیکن پولیس کے سامنے اعتراف جُرم کر لیا۔ آشنا کی اس قدر گھٹیا حرکت پر متاثرہ بچی کی والدہ نے بھی اسے خوب دھتکارا۔ 12 سالہ بچی کی والدہ کا کہنا تھا کہ رمیش ناس قدر نیچ حرکت کر رہا تھا لیکن مجھے خبر بھی نہ ہوئی، میری سہمی ہوئی بچی نے بھی اس درندے کے ڈر کی وجہ سے مجھے کچھ بھی بتانے کی ہمت نہیں کی۔ پولیس نے رمیش کے خلاف مقدمہ درج کر کے اسے گرفتار کر لیا ہے۔

متعلقہ عنوان :