مقبوضہ کشمیر ، کٹھ پتلی وزیراعلی محبوبہ مفتی نے استعفیٰ دیدیا، بی جے پی کا گورنر راج لگانے کا عندیہ

محبوبہ مفتی امن وامان کے پیش نظر زیر حراست،حکومتی اتحاد میں دوریاں نام نہاد فائر بندی کے خاتمے پر پیدا ہوئیں

منگل جون 18:32

سری نگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 جون2018ء) مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی وزیراعلی محبوبہ مفتی نے استعفیٰ دے دی دیا، بی جے پی نے گورنر راج لگانے کا عندیہ دے دیا،،پولیس نے محبوبہ مفتی کو امن وامان کی صورتحال بگڑنے کے پیش نظر حراست میں لے لیا،حکومتی اتحادی جماعتوں میں دوریاں نام نہاد فائر بندی کے خاتمے پر پیدا ہوئیں۔کشمیری میڈیا کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے اتحادی حکومت سے علیحدگی کے بعد کٹھ پتلی وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے اپنا استعفی گورنر کو بھجوادیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں کٹھ پتلی حکمراں جماعت پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی سے اختلافات کے بعد بھارتیہ جنتا پارٹی نے حکومتی اتحاد سے علیحدہ ہونے کا اعلان کردیا جس کے بعد ایوان میں اخچریت نہ ہونے کی وجہ سے محبوبہ مفتی نے اپنا استعفی گورنر کو بھجوا دیا ہے۔

(جاری ہے)

جس کے بعد اب مقبوضہ کشمیر اسمبلی کی تحلیل اور وادی میں گورنر راج کے نافذ ہونے کے امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔

محبوبہ مفتی کے مستعفی ہونے سے قبل بی جے پی کا اجلاس ہوا جس میں مرکزی پارٹی رہنماں کے علاوہ مقبوضہ کشمیر کی اتحادی حکومت میں شامل بی جے پی کے وزرا اور سرکردہ رہنماوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں پارٹی نے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی سے اتحاد کو ختم کرنے اور کٹھ پتلی حکومت سے علیحدگی کا فیصلہ کیا گیا۔۔مقبوضہ کشمیر میں اتحادی حکومت میں شامل جماعتوں کے درمیان دوری رمضان میں کی گئی نام نہاد فائر بندی کے خاتمے پر پیدا ہوئیں۔ پاکستان ڈیموکریٹک پارٹی نے فائر بندی جاری رکھنے کا مطالبہ کیا تھا لیکن بی جے پی نے بھارتی فوج کو سخت کارروائی کا حکم دیا تھا۔