طالبان رضامند ہوں تو مذاکرات کے لئے تیار ہیں، امریکہ

امریکی اور بین الاقوامی فورسز کے کردار پر بات چیت کی جا سکتی ہے، پومیو امریکا مذاکرات کی حمایت، شمولیت اور اس میں تعاون کے لیے تیار ہے،اشرف غنی

منگل جون 18:32

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 جون2018ء) امریکی سیکریٹری اسٹیٹ مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ اگر طالبان رضامند ہوں تو امریکہ مذاکرات کے لئے تیار ہے، امریکی اور بین الاقوامی فورسز کے کردار پر بات چیت کی جا سکتی ہے،امریکا مذاکرات کی حمایت، شمولیت اور اس میں تعاون کے لیے تیار ہے۔غیر ملکی ذرائع کے مطابق امریکا کے سیکریٹری اسٹیٹ مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ اگر طالبان امن مذاکرات کا حصہ بنے تو ٹرمپ انتظامیہ طالبان کے ساتھ افغانستان میں امریکی اور بین الاقوامی فورسز کے کردار پر بات کر سکتی ہے۔

واضح رہے کہ افغان حکومت کی جانب سے رمضان المبارک کے آخری عشرے میں جنگ بندی کا فیصلہ سامنے آیا تھا جس کے بعد طالبان نے بھی آمادگی کا اظہار کیا تھا۔عیدالفطر کے موقع پر طالبان اور افغان فوسرز کی بغل گیر ہونے کی تصویریں منظر عام پر آنے کے بعد افغان حکومت نے جنگ بندی میں مزید 10 دن کی توسیع کردی تھی۔

(جاری ہے)

امریکا کے سیکریٹری اسٹیٹ مائیک پومپیو نے کہا کہ افغانستان کے صدر اشرف غنی نے اپنے بیان میں افغان شہریوں اور امن مذاکرات کی ضرورت میں عالمی فورسز کے کردار پر زور دیا۔

انہوں نے کہا کہ امریکا مذاکرات کی حمایت، شمولیت اور اس میں تعاون کے لیے تیار ہے۔خیال رہے کہ طالبان کا ہمیشہ سے یہ مطالبہ رہا ہے کہ افغانستان سے امریکا اور اس کے اتحادی ممالک کی فورسز کے انخلا کے بغیر امن مذاکرات کی گنجائش موجود نہیں ہے۔دوسری جانب امریکی سفارتکاروں نے زور دیا کہ مذاکرات کے تمام ادوار میں افغان حکومت کی شمولیت لازمی ہونی چاہیے۔