لیسکو کے کنٹریکٹ ملازمین و افسران کا احتجاج رنگ لے آیا

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے لیسکو چیف مجاہد پرویز چٹھہ سے دو روز میں جواب طلب کر لیا

منگل جون 19:30

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 جون2018ء) لیسکو کے کنٹریکٹ ملازمین و افسران کا احتجاج رنگ لے آیا، چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے لیسکو چیف مجاہد پرویز چٹھہ سے دو روز میں جواب طلب کر لیا۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی میں 2015 میں افسران و ملازمین کو کنٹریکٹ پر تعینات کیا گیا، تعیناتی کے وقت اس بات کی یقین دہانی کروائی گئی کہ کارکردگی کی بنیاد پر افسران کو ریگولر کر دیا جائیگا تاہم نجکاری کمیشن کی جانب سے اعتراض ہونے کی وجہ سے افسران و ملازمین کو مستقل نہیں کیا گیا، جس پر ایس ڈی اوز نے سپریم کورٹ رجسٹری کے سامنے احتجاج ریکارڈ کروایا تھا، احتجاج کے بعد ایس ڈی اوز کی درخواست چیف جسٹس آف پاکستان کو دی گئی چیف جسٹس نے درخواست پر لیسکو چیف مجاہد پرویز چٹھہ سے دو روز میں جواب طلب کرلیا۔

لیسکو چیف کی جانب سے جواب داخل کروانے کے بعد سپریم کورٹ کا فیصلہ آئے گاواضح رہے کہ لیسکو میں اس وقت سو سے زائد ایس ڈی اوز جبکہ چار ہزار پانچ سو ملازمین کنٹریکٹ پر کام کر رہے ہیں