ْنوشکی پی بی 33سی2امیدواروں کے کاغزات مسترد 30امیدواروں کے کاغزات جانچ پڑتال کے بعد درست قرارپائے

منگل جون 21:20

نوشکی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 جون2018ء) الیکشن 2018ء کے سلسلے میں کاغزات کی جانچ پڑتال کا عمل مکمل نوشکی پی بی 33سی2امیدواروں کے کاغزات مسترد 30امیدواروں کے کاغزات جانچ پڑتال کے بعد درست قرارپائے جبکہ قومی اسمبلی این اے 268نوشکی ،چاغی،خاران سے 30میں سے 29امیدواروں کے کاغزات درست قرار دئیے گئے تفصیلات کے مطابق انتخابات 2018کے دوسرے مرحلے میں کاغزات کی جانچ پڑتال کا عمل مکمل ہوا پی بی 33سے ڈاکٹر سکندر بلوچ کے کاغزات مکمل نہ ہونے اور میر احمد کی ریٹرننگ آفیسر کے سامنے پیش نہ ہونے کی بنا پر کاغزات مسترد کر دئیے گئے جبکہ این اے 268سے لونگ خان کے کاغزات مکمل نہ ہونے کی بنا پر ریٹرننگ آفیسر نے مسترد کر دئیے ،پی بی 33 کے امیدوار سابق صوبائی وزیر حاجی میر غلام دستگیر بادینی نے سابق صوبائی وزیر بی این پی کے امیدوار بابو میر محمد رحیم مینگل کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت درج ایف آئی آر کی کاپی بطور اعتراض ریٹرننگ آفس میں جمع کر دی جس پر ریٹرننگ آفیسر امجد خان خلجی نے پی بی 33نوشکی سے بلوچستان نیشنل پارٹی کے امیدوار بابو میر محمد رحیم مینگل کے خلاف حاجی میر غلام دستگیر بادینی کے درخواست کو مستر د کر کے بابو میر محمد رحیم مینگل کے کاغزات منظور کر لئے سابق صوبائی وزیر حاجی میر غلام دستگیر بادینی نے فیصلے کے خلاف بلوچستان ہائی کورٹ جانے کا اعلان کیا ،ضلع کونسل نوشکی کے چیئر مین میر اورنگزیب میر اورنگزیب جمالدینی نے ضلع کونسل کے عہدے سے استعفے کی درخواست بھی ریٹرننگ کے پاس جمع کرا دی کامیابی کے صورت میں ضلع کونسل کے عہدے سے مستعفی ہونگے ،،عید کے بعد امیدواروں نے گرم موسم میں سیاست گرم کر دی اتحاد کے لئے گہما گہمی باقاعدہ انتخابی مہم شروع ہوگئی