نگران صوبائی وزیر صحت فیض کاکڑ کا کوئٹہ کے سرکاری ہسپتالوں کا اچانک دورہ

مریضوں کو فراہم کردہ سہولیات کا جائزہ لیا

منگل جون 21:30

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 جون2018ء) نگران صوبائی وزیر صحت فیض کاکڑ نے عید کی تعطیلات کے دوران صوبہ دارالحکومت کوئٹہ کے بڑے سرکاری ہسپتالوں کا اچانک دورہ کیا۔ جس میں سیول ہسپتال، بی ایم سی ہسپتال، شیخ زید اسپتال، ٹراما سینٹر میں مریضوں کی عیادت کی اور ان سے طبی سہولیات کی فراہمی کی بارے میں دریافت کیا جہاں پر مریضوں اور ان تیمارداروں نے بتایا کہ صحت کے شعبہ میں پائیداراصلاحات سے انقلابی تبدیلی آرہی ہیعوام کی خوشحالی کیلئے صحت پر توجہ بہت ضروری ہے ،صوبیکے ہسپتالوں میں ہیلتھ کلچر بدل چکا ہے۔

بنیادی اوردیہی مراکزمیں ادویات کی فراہمی اور سہولتوں میں بہتری کا تناسب بڑھ رہا ہے۔ علاوہ ازیں انہوں نے مفتی محمود اسپتال کچلاک کا اچانک دورہ کیا جہاں پر اسپتال کو بند پاکر انہوں نے انتہائی برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہدایات جاری کیں اور احکامت دیتے ہوئے کہا کہ اسپتال انتظامیہ کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے انھوں نے بتایا کہ لوگوں کوطبی سہولیات کی فراہمی کے لیے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لایا جا رہا ہے اور اس حوالے سے کوئی غفلت اور کوتائی کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا ۔

(جاری ہے)

علاوازیں صوبائی وزیر صحت نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال زیارت کے ڈی ایچ او ڈاکٹر نعیم زرکون کو خصوصی ٹیلیفونک رابطہ ہونے پر ہسپتال کے عملے الرٹ رکھنے کی ہدایات، واضح رہے زیارت ایک تفریحی مقام ہے عید کے دنوں میں دور درازعلاقوں سے سیاح بڑی تعداد میں آتے ہیں جس پر نگران صوبائی وزیر نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کواٹر ہسپتال زیارت کے عملے کو الرٹ رہنے کی ہدایت کی اور تاکید کی کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں عوام کو طبی سہولیت ہر ممکن طور پر دیا جائے کیا جبکہ ڈی ایچ او ڈاکٹر نعیم زرکون نے وزیر صحت کے اس حکم کو بجا لاتے ہوئے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں اسٹاف کی حاضری کو ممکن بنایا۔

متعلقہ عنوان :