ترکی شام میں جاری تمام عوامل میں کلیدی حیثیت کا ملک ہے،میولود چاوش اولو

ترکی کے بغیر شامی مسئلے کا حل ممکن نہیں، اعتماد افروزی اور انسانی امداد کے حوالے سے ترکی کا کردار قائدانہ رہا ہے، وزیر خاجہ

بدھ جون 14:37

انقرہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 جون2018ء) ترک وزیرِ خارجہ میولود چاوش اولو نے کہا ہے کہ ترکی شام میں جاری تمام عوامل میں کلیدی حیثیت کا ملک ہے، جھڑپوں کے سد ِ باب، اعتماد افروز اقدام اور انسانی امداد کے معاملے پر ترکی کا کردار قائدانہ رہا ہے،،ترکی کی کلیدی حیثیت تسلیم کئے بغیر شام کے مسائل کو حل نہیں کیا جا سکتا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ترک وزیرِ خارجہ میولود چاوش اولو کا کہنا ہے کہ ترکی شام کے حوالے سے جاری تمام تر عوامل میں ایک کلیدی ملک کی حیثیت رکھتا ہے۔

چاوش اولو نے ایک نجی ٹیلی ویژن چینل پر اہم اعلانات کرتے ہوئے کہا کہ "جھڑپوں کے سد ِ باب، اعتماد افروز اقدام اور انسانی امداد کے معاملے میں ترکی قائدانہ کردار ادا کر رہا ہے۔ اسوقت شامی مہاجرین کی وطن واپسی اور شام سے متعلق ہر طرح کے معاملات میں ترکی بنیادی طور پر ایک کلیدی ملک کی حیثیت رکھتا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ترکی منبج کو دہشت گردوں سے پاک کرنے، امریکی اسلحہ کو دہشت گردوں سے واپس لینے اور شام میں روڈ میپ کے تعین کے معاملات میں بھی ایک اہم ملک کی حیثیت رکھتا ہے، ترک فوجی دستوں نے منبج میں گشت کرنا شروع کر دیا ہے، علاقے میں امن و آشتی کے قیام کے بعد اسے اصل مالکین کے سپرد کر دیا جائیگا۔

چاوش اولو کا کہنا تھا کہ ہم، روس اور ایران کے ہمراہ شام میں انتظامیہ اور مخالفین کے درمیان تصادم کا سد باب کرتے ہوئے انہیں ایک ہی میز پر جمع کرنے اور حل مذاکرات شروع کرانے کا ہدف رکھتے ہیں۔وزیر نے اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ امریکی وفاقی تحقیقاتی بیورو ایف بی آئی نے فیتو دہشت گرد تنظیم کے 20 کے قریب کارندوں کے خلاف تفتیشی عمل شروع کر دیا ہے۔