ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر جاپہنچا‘اوپن مارکیٹ میں125روپے میں فروخت

انٹربینک مارکیٹ میں روپے کی قدرمیں بہتری دیکھی جارہی ہے۔کرنسی ڈیلرز

Mian Nadeem میاں محمد ندیم بدھ جون 14:51

ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر جاپہنچا‘اوپن مارکیٹ میں125روپے ..
کراچی(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔20 جون۔2018ء) اوپن مارکیٹ میں ڈالر 50 پیسے مہنگا ہو گیا،کرنسی ڈیلرز کے مطابق اوپن مارکیٹ میں ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 125 روپے پر فروخت ہو رہا ہے۔امریکی ڈالر طلب میں اضافے کے باعث اوپن مارکیٹ میں ڈالر 50 پیسے مہنگا ہوکر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 125 روپے میں فروخت ہونے لگا۔قبل ازیںفاریکس ڈیلر کے مطابق انٹربینک میں 33 پیسے سستا ہونے کے بعد ڈالر 121اعشاریہ 73 سے کم ہوکر 121 روپے 40پیسے پر آگیا ہے۔

فاریکس ڈیلرز کے مطابق انٹربینک مارکیٹ میں روپے کی قدرمیں بہتری دیکھی جارہی ہے۔کرنسی ڈیلرز کا کہنا ہے کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی طلب کے باعث امریکی ڈالر مزید 50 پیسے مہنگا ہوگیا ہے جس سے اوپن مارکیٹ میں امریکی ڈالر 124 روپے میں خریدا اور 125 روپے کی نئی بلند ترین سطح پر فروخت ہورہا ہے۔

(جاری ہے)

ڈیلرز کا کہنا ہے کہ دو روز میں اوپن مارکیٹ میں ڈالر 2 روپے مہنگا ہوچکا ہے اور انٹربینک اور اوپن مارکیٹ کے درمیان ڈالر کا فرق بھی 3 روپے 60 پیسے ہوچکا ہے۔

کاروبار کے دوران انٹر بینک میں ڈالر 61 پیسے مہنگا ہوکر 122 روپے کی بلند ترین سطح پر جا پہنچا، اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر ڈیڑھ روپے مہنگا ہوکر 124 روپے 50 پیسے کی بلند سطح پر فروخت ہونے لگا۔فاریکس ڈیلرز کے مطابق عید تعطیلات کے بعد کاروباری ہفتے کے پہلے روز انٹربینک اور اوپن مارکیٹ میں ڈالر مہنگا ہو گیا۔معاشی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ماہانہ درآمدی ادائیگیاں 5 ارب 90 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئی ہیں ،ساتھ ہی بیرونی قرضوں کی ادائیگیوں کے باعث روپے پر دباو دیکھا جارہا ہے جس کی وجہ سے 8 جون 2018 سے اب تک انٹربینک میں ڈالر چھ روپے اڑتیس پیسے مہنگا ہوچکا ہے۔

متعلقہ عنوان :