اولیائے کرام اور علمائے و عظام امت مسلمہ کے درخشندہ ستارے ہیں‘ اولیاء و علماء کے گستاخ قیامت میں ذلیل و خوار ہونگے‘ علمائے کرام دین کی نشرواشاعت اور اولیاء و عظام دین کی روحانی طاقت کا ذریعہ ہیں

علماء کرام کا 2 روزہ عالمی روحانی نقشبندی اجتماع کے لئے مشاورتی کمیٹی سے خطاب ْ

بدھ جون 15:50

مظفرآباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 جون2018ء) اولیائے کرام اور علمائے و عظام امت مسلمہ کے درخشندہ ستارے ہیں۔ اولیاء و علماء کے گستاخ قیامت میں ذلیل و خوار ہونگے۔ علمائے کرام دین کی نشرواشاعت اور اولیاء و عظام دین کی روحانی طاقت کا ذریعہ ہیں۔ اولیاء کرام و علمائے عظام کی عظمتوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے پروگرامات کا انعقاد وقت کا تقاضا ہے۔

ان خیالات کا اظہار مورخہ21، 22جون بروز جمعرات و جمعة المبارک جامع مسجد فاروق اعظمؓ مچھیارہ میں منعقد ہونے والے دو روزہ عالمی روحانی نقشبندی اجتماع کے لئے مشاورتی کمیٹی سے خطاب کرتے ہوئے علماء کرام نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ برصغیر میں اسلام کی اشاعت و حفاظت کا سہرا اولیاء کرام ، صوفیائے عظام اور علماء کرام کے سر پر ہے۔

(جاری ہے)

علماء کرام کی جدوجہد اخلاص اور استقامت کی وجہ سے آج یہ دین ہمارے درمیان اپنی اصل حالت میں موجود ہے ۔

ہمارے مذہب اسلام کی بیخ کنی کے لئے اغیار نے بہت کوششیں کیں کبھی ختم نبوت ﷺ پر ڈاکا ڈالا گیا اور کبھی صحابہ کرام ؓ کے گستاخان نے اودھم مچایا۔ کبھی فرقہ معتزلہ عروج پر پہنچا اور کبھی کوئی اور فتنہ قہر بن کر اسلام پر ٹوٹا مگر آج تک دین اسلام جو اپنی اصل حالت میں ہمارے پاس محفوظ ہے تو یہ علماء کرام اور صوفیاء عظام کی قربانیوں کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مچھیارہ گائوں میں ولی کامل یادگار اسلاف حضرت مولانا عبدالخالق ؒ کی لازوال قربانیوں کی بدولت آج گائوں کے ہر گھر میں ایک حافظ یا حافظہ موجود ہے۔ کئی علماء کرام اور مفتیان عظام لوگوں کی دینی رہنمائی کر رہے ہیں یہ سب حضرت کی کرامات و تعلیمات کا نتیجہ ہے۔ حضرت کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے 21، 22جون بروز جمعرات و جمعة المبارک ایک روحانی تبلیغی و اصلاحی اجتماع کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس کے مہمان خصوصی عظیم روحانی اسکالر و جانشین مرشد عالم حضرت مولانا پیر عبدالرحیم نقشبندی ہونگے۔

جبکہ دو روزہ اجتماع سے حضرت مولانا قاضی محمود الحسن اشرف امیرآل جموںوکشمیر جمعیت علمائے اسلام ، حضرت فیصل الرحمن اور حضرت مولانا مفتی اختر صاحب و مقامی علماء کرام خطاب فرمائیں گے۔

متعلقہ عنوان :