چین کو پاک بھارت بہتر تعلقات کی امید ہے،گینگ شوانگ

پاک بھارت مذاکرات اور مشاور ت جا ری رکھتے ہوئے تعلقات کو استوار کریں، چین خطے میں امن و استحکام اور ترقی کے فروغ کیلئے دونوں ممالک سے بہتراور مضبوط تعلقات کا خواہاں ہے، چین کو انسانی کونسل سے امریکی انخلا پر افسوس ہے، چین ہمیشہ انسانی حقوق کے لئے لڑتا رہا ہے، مذاکرات اقتصادی اور تجارتی معاملات پر متفق ہونے سے کہیں زیادہ مضبوط ہونے چاہئیں،ترجمان چینی وزارت خارجہ

بدھ جون 18:10

بیجنگ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 جون2018ء) چینی وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے کہا ہے کہ چین پاک بھارت دو طرفہ تعلقات کی بہتری کی امید رکھتا ہے، پاک بھارت باہمی اعتماد میں اضافہ کریں گے، مذاکرات اور مشاورت کا عمل جاری رکھتے ہوئے تعلقات کو استوار کریں گے، چین خطے میں امن و استحکام اور ترقی کے فروغ کیلئے دونوں ممالک سے بہتراور مجبوط تعلقات کا خواہاں ہے، چین کو انسانی کونسل سے امریکی انخلا پر افسوس ہے، چین ہمیشہ انسانی حقوق کے لئے لڑتا رہا ہے، مذاکرات اقتصادی اور تجارتی معاملات پر متفق ہونے سے کہیں زیادہ مضبوط ہونے چاہئیں۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے معمول کی پریس بریفنگ میں صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ چین کو پاک بھارت دو طرفہ تعلقات کی بہتری کی امید ہے۔

(جاری ہے)

پاک بھارت باہمی اعتماد میں اضافہ کریں گے۔۔پاکستان اور بھارت مذاکرات اور مشاورت کا عمل جاری رکھتے ہوئے تعلقات کو استوار کریں گے۔۔چین کے یہ دونوں ممالک اچھے پڑوسی ہیں لہٰذا چین خطے میں امن و استحکام اور ترقی کے فروغ کیلئے دونوں ممالک سے بہتراور مجبوط تعلقات کا خواہاں ہے۔

دونوں ممالک اور دیگر ہمسائیوں کے ساتھ پر امن تعلقات خطے میں استحکام کے لئے اہم ہیں۔انسانی حقوق کونسل سے امریکی علیحدگی بارے سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چین کو انسانی کونسل سے امریکی انخلا پر افسوس ہے۔۔امریکہ کو ایسا فیصلہ نہیں کرنا چاہئے تھا۔نسانی حقوق کے کونسل کا قیام انسانی حقوق، تبادلہ اور باہمی تفہیم کے میدان میں مذاکرات اور تعاون کے لئے تمام جماعتوں کے لئے ایک اہم پلیٹ فارم ہے۔

چین ہمیشہ انسانی حقوق کے لئے لڑتا رہا ہے۔۔چین انسانی حقوق کونسل کی مکمل حمایت کرتا ہے۔ . انہوں نے مزید کہا کہ چین تمام جماعتوں کے ساتھ کام جاری رکھنے اور تعاون کے ذریعہ بین الاقوامی انسانی حقوق کی صحت مند ترقی میں اپنا حصہ بنانا جاری رکھے گا۔امریکی رویہ زیادہ تر ممالک کے لئے عدم اطمینان کا باعث ہے امریکہ اسے اچھی طرح جانتا ہے۔ ترجمان نے امریکی ٹیکس جمع کرنے کی حالیہ اعلان پر رسمی سا جوعاب دیتے ہوئے کہا کہ مذاکرات اقتصادی اور تجارتی معاملات پر متفق ہونے سے کہیں زیادہ مضبوط ہونے چاہئیں۔

ہم ہمیشہ وکالت کرتے ہیں کہ چین اور امریکہ نے مذاکرات اور مشاورت کے ذریعہ اقتصادی اور تجارتی معاملات کو مناسب طریقے سے سنبھالا جائے۔۔چین اپنے مفادات اور جائز حقوق کی ہر طرح سے حفاظت کرے گا۔