بھارت ،ْ سابقہ دوست کی نازیبا تصاویر شائع کرنے کا الزام،ایک شخص گرفتار

بدھ جون 19:20

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 جون2018ء) بھارتی ریاست مہاراشٹر کے دارالحکومت ممبئی میں اپنی سابقہ دوست کی غیر اخلاقی تصاویر انٹرنیٹ پر شائع کرنے کے الزم میں ایک شخص کو گرفتار کرلیا گیا۔۔بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی ریاست مغربی بنگال میں ہارڈ ویئر کی دکان کے مالک 31 سالہ جونیئر اسٹیورٹ گوہا نے ممبئی کی رہائشی 26 سالہ خاتون کی نازیبا تصاویر لڑکی کے موبائل کے ذریعے ہی سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر شائع کیں۔

متاثرہ خاتون ایک نجی بینک میں بطور مینیجر کام کرتی ہیں اور انہوں نے پولیس کو واقع کی اطلاع دی اور انہی کی درخواست پر ملزم کو گرفتار کرکے عدالت کے سامنے پیش کردیا گیا۔۔پولیس کے مطابق خاتون کا اپنی درخواست میں کہنا تھا کہ ان کی جونیئر اسٹیورٹ گوہا سے دسمبر 2016 میں ممبئی کے ایک ہسپتال میں ملاقات ہوئی تھی جہاں دونوں کے والد زیرِ علاج تھے۔

(جاری ہے)

خاتون نے پولیس کو بتایا کہ اس ملاقات کے بعد دونوں کے درمیان دوستی ہوگئی اور انہوں نے اپنے رابطے کی تفصیلات ایک دوسرے کو فراہم کیں۔انہوں نے بتایا کہ ان کی دوستی بہت جلد ایک ’تعلق‘ میں تبدیل ہوگئی اور اسی دوران جونیئر اسٹیورٹ گوہا نے ان کی غیر اخلاقی تصاویر بھی لیں۔۔پولیس افسر کے مطابق خاتون کا موقف تھا کہ جونیئر اسٹیورٹ گوہا کو ان کی وفاداری پر شک تھا اور اسی شک کو دور کرنے کیلئے انہوں نے اسے اپنا موبائل فون اور 2 کریڈٹ کارڈز بھی بھجوائے۔

خاتون نے پولیس کو بتایا کہ ملزم نے لڑکی کے بھیجے گئے کریڈٹ کارڈز کا استعمال کیا اور پھر اس نے مالی مدد بھی طلب کی جس پر خاتون نے اسے 3 لاکھ 23 ہزار بھارتی روپے بھی دئیے۔متاثرہ خاتون نے اپنی درخواست میں بتایا کہ ان کے درمیان جنوری 2018 میں ایک معمولی جھگڑا ہوا جس پر ملزم نے ان کی تصاویر انٹرنیٹ پر شائع کردیں اور انہیں چند گھنٹوں بعد ڈیلیٹ کردیا، لیکن ان کی دوستوں نے انہیں فون کرکے ان تصاویر کے بارے میں آگاہ کیا۔خاتون نے اپنی درخواست میں مزید بتایا کہ ملزم نے اسی طرح کا جرم کچھ روز بعد دوبارہ کیا کیونکہ اس کے پاس ہی متاثرہ بینک منیجر کا موبائل فون موجود تھا۔