ایم ایم اے کے تحت 8 جولا ئی کو کراچی میں تاریخی جل جلسہ ہوگا

جمعرات جون 18:30

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جون2018ء) متحدہ مجلس عمل کے مرکزی رہنما و این اے 242 پر نامزد امیدوار اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ 2018 کے انتخابات ہمارے اجتماعی شعور کا امتحان ہے۔ اگر دوبارہ ان ہی کرپٹ ، نا اہل و شرابی نمائندوں کو کامیاب کیا تو پھر مہنگائی،، بیروزگاری و کرپشن عوام کا مقدر اور ماتم کرنے کے سوا کچھ ہاتھ نہیں آئے گا۔ اب یہ عوام پر منحصر ہے کہ وہ اس کرپٹ ٹولے کو دوبارہ مسلط کر کے اپنا اور ملک کا مستقبل داؤ پر لگانا چاہتے ہیں یا اہل و صادق و امین قیادت کو منتخب کرکے ملک و اپنے جوجوان نسل کا مستقبل روشن کرنا چاہتے ہیں۔

دینی جماعتوں کے اتحاد متحدہ مجلس عمل کے تحت 8 جولائی کو کراچی میں تاریخی جلسہ ہوگا جس سے مرکزی صدرمولانا فضل الرحمان،سینیٹر سراج الحق ودیگرمرکزی وصوبائی قائدین خطاب کریں گے۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انہوں نے محمد ی گوٹھ میں جمعیت علمائے اسلام ف کے رہنما اورجامع مسجد بلال کے امام خطیب مولانا احسان اللہ شاہ سے وفد کے ہمراہ ملاقات اور کارنر اجتماعات سے خطاب کے دوران کیا ۔

اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ کرپٹ دبے دین ٹولے نے اسلام و کلمہ طیبہ کے نام سے معرض وجود میں آنے والی مملکت خداد پاکستان کی نظریاتی سرحدوں کو کھوکھلا کردیا ۔ فرسودہ نظام ، سودی معیشت اور کرپٹ ٹولے نے عوام کو مہنگائی ، بے روز گاری ، کرپشن،، بجلی و پانی کا بحران کے سوا کچھ بھی نہیں رہا ہے۔ علماء کرام منبر ومحراب کے پلیٹ فارم سے عوامی شعور اجاگر کرکے انتخابات میں اہل ودیندارلوگوں کی کامیابی کو یقینی بنانے کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔ عوام کے تمام مسائل کا حل اسلامی نظام کے نفاذ میں ہی مضمر ہے۔