شہداء کی قربانیوں کے ساتھ کھلواڑ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے ، سید علی گیلانی

سماجی برائیوں کو قلع قمع کرنے کی ضرورت ہے ، اجتماع سے خطاب

جمعرات جون 21:30

سرینگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جون2018ء) کل جماعتی حریت کانفرنس’’’گ‘‘گروپ کے چیئرمین سید علی گیلانی نے شہدائے ترال کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہماری قوم کے غیور نوجوان اپنی اٹھتی جوانیوں اور گرم گرم لہو سے تحریک حق خودارادیت اور آزادی برائے اسلام کا عنوان رقم کرنے میں کوئی پس و پیش نہیں کر رہے ہیں پنجورہ ترال کے شہید عادل احمد لون اور ان کے دیگر ساتھیوں کو خراج عقیدت ادا کرنے کے حوالے سے بلائے گئے ایک عوامی اجتماع سے اپنے ٹیلی فونک خطاب میں حریت راہنما نے بھارت کے جبری قبضے سے آزادی حاصل کئے جانے کے عہد کا اعادہ کرتے ہوئے کہاکہ شہداء کے مقدس لہو کو کسی بھی صورت میں رائیگان ہونے نہیں دیا جائے گا اور نہ ہی ان عظیم قربانیوں کے ساتھ کسی کو غداری کرنے کی اجازت دی جا سکتی ہے حریت راہنما نے بعض تحریک دشمن عناصر کی طرف سے تحریک آزادی کا معاوضہ صرف اور صرف حقیر مفادات و مراعات قرار دینے کو سختی سے کے ساتھ رد کرتے ہوئے کہا کہ اگر بھارت ہماری سڑکوں اور گلی کوچوں میں تارکول کے بجائے سونا ہی سونا بچھائے بھی ہم اپنی مقدس جدوجہد آزادی سے دستبردار نہیں ہو سکتے ۔

(جاری ہے)

حریت راہنما نے اپنی مظلوم قوم سے دردمندانہ اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے لخت ہائے جگر کے مقدس لہو کی تحریم و تکریم کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے مراعات اور مفادات کے عوض بیچ کھانے کی ناپاک کوششوں کو ناکام و نامراد بنانے میں کوئی فرد گزاشت نہ کریں کیونکہ شہاء کا لہو حرم پاک کے عزت و تریکم سے بھی بڑھ کر ہے ۔ حریت راہنما نے جملہ شہدائے کشمیر کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہماری تحریک آزادی کا قرض ہم سب پر یکساں ہے اور اس کے تمام تر لوازمات کو پورا کرنا ہم سب کی ملی ذمہ داری ہے ۔

حریت راہنما نے سماجی برائیوں کو قلع قمع کرنے کے لئے قوم سے یہ بھی اپیل کی کہ وہ اپنے گھروں کے اندر اسلامی مزاج کو پیدا کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں اپنی نئی نسل کو بے راہ روی ، بے حیائی ، شراب اور دیگر منشیات سے باز رکھنے کی تاکید کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں اطلاعات مل رہی ہیں کہ ہمارے نوجوانوں کے علاوہ جوان بیٹیوں کو فوجی کیمپوں میں بلایا جاتا ہے یہ گھنائونی حرکت ہے جس سے پرہیز کرنا فرض عین ہے ۔ ۔