قلعہ عبداللہ کے انتخابی فہرستوں میں بہت بڑی پیمانے پر بے ضابطگی کی گئی ،سابق وزیر بسم اللہ خان کاکڑ

جمعرات جون 22:10

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جون2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی کا قومی اسمبلی 263 قلعہ عبداللہ اور پی بی 21قلعہ عبداللہ کیلئے نامزد امیدوار سابق وزیر بسم اللہ خان کاکڑ نے قلعہ عبداللہ کے انتخابی فہرستوں میں بہت بڑی پیمانے پر بے ضابطگی جو الیکشن کمیشن کے ضلع قلعہ عبداللہ اور متعلقہ انتظامی افسران کی طرف سے فہرستوں میں کثیر تعداد میں رائے دھندگان کو دوسرے حلقوں اور ضلع سے باہر کے لوگوں کی کوئی منشاء لعلوم کئے بغیر توبہ اچکزئی اور حلقہ بی پی 21میں اندراج انتخابات میں وسیع پیمانے پر دھاندلی کرنے کا واضح ثبوت ہے ،2پارٹیوں کے امیدواروں کی الیکشن کمیشن قلعہ عبداللہ کے ذمہ داران اور ضلعی انتظامیہ کے افسران کو مالی فوائد دیکر رائے دھندگان کیساتھ بڑی خیانت کی ہے ،اس حد تک کہ 25سے زیادہ انتخابی فہرستوں میں تین گناہ سے زیادہ حلقہ سے باہر کے رائے دھندگان کا اندراج کیا گیا ہے ،ایک سیکشن جسکی اپنے رائے دھندگان کی تعداد 8سو ہے وہاں 2400کی اندراج دوسرے حلقوں سے کیا گیا ہے اور فہرست کو 3200سے زیادہ بنایا گیا ہے ،ایک ہی ووٹر کا اندراج ایک فہرست میں کئی دفعہ کیا گیا ہے ،اندازاً بیس ہزار کی اس طرح جعلی اندارج کی گئی ہے ،یہی امیدوار اور الیکشن کا عملہ تمام پولنگ عملہ اپنے کارکنوں کو بگاء ہے کیونکہ کنٹرول روم ان پارٹی کے کارکنوں کو غیر قانونی طورپر بگایا گیا ہے ،اگر صوبائی الیکشن کمشنر نے فوری اقدامات نہ اٹھائے تو ضلعی الیکشن کمشنر کیخلاف کارروائی نہیں کی تو ہم تمام ثبو ت کیساتھ عدالت جائیں گے۔