سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کاغذات نامزدگی مسترد کرنے کیخلاف ایپلٹ ٹربیونل میں اپیل دائر کر دی

ْکاغذات نامزدگی حلقے میں مفاد عامہ کے کاموں کی تفصیلات فراہم نہ کرنے پر مسترد کئے گئے تھے

جمعہ جون 12:11

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کاغذات نامزدگی مسترد کئے جانے کے ریٹرننگ افسر کے فیصلے کو ایپلٹ ٹریبونل میں چیلنج کردیا۔جمعہ کو سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے این اے 53 سے کاغذات نامزدگی مسترد کئے جانے کے خلاف اپیلٹ ٹربیونل میں اپیل دائر کردی۔ شاہد خاقان عباسی نے اپنے وکیل کے ذریعے سے کاغذات نامزدگی مسترد کئے جانے کے فیصلے کو چیلنج کرتے ہوئے استدعا کی ہے کہ ریٹرننگ افسر کے فیصلے کو کالعدم قرار دیتے ہوئے این اے 53 اسلام آباد سے الیکشن لڑنے کی اجازت دی جائے۔

سابق وزیراعظم نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 اسلام آباد کیلئے کاغذات نامزدگی جمع کرائے تھے جس پر ریٹرننگ افسر نے اعتراض لگاتے ہوئے مسترد کردیا تھا۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ ریٹرننگ افسر نے کاغذات نامزدگی کے ساتھ جمع کرانے والے حلف نامے کی شق ‘این’ کے تحت شاہد خاقان عباسی کے نامزدگی فارم مسترد کئے جبکہ شق ‘این’ کہتی ہے کہ امیدواروں کو اپنے حلقے میں مفاد عامہ کے کاموں کی تفصیلات فراہم کرنا ہوتی ہے۔و اضح رہے کہ ملک بھر میں ہائی کورٹ کے ججز پرمشتمل 21 ٹربیونل بنائے گئے ہیں جہاں ریٹرننگ افسران کے فیصلوں کے خلاف آج تک اپیلیں دائر کی جاسکیں گی اور ٹربیونلز 27 جون تک اپیلوں سے متعلق فیصلے کریں گے۔