ملازمین سماجی بہبود و ترقی نسواں کا احتجاج ‘ ایپکا آزاد کشمیر ،غیر جریدہ ملازمین آزاد کشمیر کی حمایت کا اعلان

جمعہ جون 16:14

آٹھ مقام(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) ملازمین سماجی بہبود و ترقی نسواں کا احتجاج ، ایپکا آزاد کشمیر ،غیر جریدہ ملازمین آزاد کشمیر نے حمایت کا اعلان کر دیا۔نو سے تیرہ سال سے تعینات ایڈہاک ملازمین سماجی بہبود و ترقی نسواں نے حکومت آزاد کشمیر کو24جون کی ڈیڈ لائن دے ہے۔ 24جون تک مستقل نہ کیا گیا تو 25جون کو مرکزی ایوان صحافت مظفرآباد کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا جائے گا جو مستقل کیے جانے تک جاری رہے گا ۔

احتجاجی دھرنے کے حوالے سے ملازمین سماجی بہبود کے ملازمین تنظیموں سے مشاورت جاری ہے۔ ایپکا آزاد کشمیر کے مرکزی صدر و مر کزی سیکرٹری جنرل پاکستان سید صدیق حسین شاہ ،غیر جریدہ ملازمین کے مرکزی صدر سالک رشید عباسی نے بھرپور حمایت کا اعلان کردیا ہے۔

(جاری ہے)

سماجی بہود وترقی نسواں کے ملازمین عابدہ پروین،راشدہ ممتاز،ارم اعجاز،سمیرا کلثوم، ثمینہ عزیز ذکاء الرحمان اعوان راجہ اعجاز ظہیر،راجہ فاروق خان،سردار نعیم خان،راجہ عمر،علی سبحان،ارباب قیوم،نواز مظفر،محسن شاہ،راشد کاشیانہ،امبرین کوثر،سائدہ پروین،سائرہ انجم،نازیہ بشیر،زرقاء کوثر،رخسانہ اعجاز،شگفتہ نزیر عذرا اعوان،محمد زاہد،قمرپرویز،ظہیر احمد،گلناز بشیر و دیگر نے کہا کہ سماجی بہبود وترقی نسواں میں آزاد کشمیر بھر سے 3سو سے زاہد ملازمین عرصہ نوسے 13سال سے سماجی بہبود وترقی نسواں کے پروگرام 14ویمن ڈویلمنٹ سنٹرز،ایمپلائمنٹ سنٹرز،شلٹر ہومز اور کاشیانہ سنٹرز میں بطور ایڈھاک کام کررہے ہیں اور ہمیںنو سے 13سال گزر گئے ہیں محکمہ نے جانسہ دے رکھا ہے کہ آپ کو مستقل کیا جائے مگر ابھی تک ہمیں مستقل نہیں کیا گیا ہے۔

وزیر سماجی بہبود نے بھی ہمیں یقین دہانی کروائی تھی کہ آپ کو مستقل کیا جائے گا لیکن محکمہ خود اس میں روڑے اٹکا رہا ہے ہم نے آزاد کشمیر کی جملہ ملازمین تنظیموں کے صدور و جنرل سیکرٹری صاحبان سے رابطہ کرنے کے بعد احتجاج کی کال دی ہے ہم 25تاریخ کو اپنے بچے لے کر سڑک پر نکلیں گے اور جب تک ہمیں ہمارا حق نہیں دیا جاتا اس وقت تک ہم احتجاج پر رہیں گے ۔ملازمین تنظیموں نے ہمارے احتجاج کی مکمل حمایت کی ہے اورہم نے حکومت کو 24جون 2018کی ڈیڈ لائن دی ہے ہمیں 24جون تک مستقل نہ کیا گیا تو 25 جون کو بچوں سمیت سڑکوں پر آجائیں گئے اور مرکزی ایوان صحافت کے سامنے احتجاجی کیمپ لگائیں گے جو ہمارے مطالبات پورے ہونے تک جاری رہے گا۔

متعلقہ عنوان :