عمران خان کی زندگی کو خطرہ؛ انتخابات تین ماہ متلوی کیے جائیں

عمران خان فوج کی طرف جانے والے ہر وار کو اپنی کشادہ چھاتی پر سہہ رہے ہیں، اُن کی زندگی کو بے پناہ خطرات لاحق ہیں،ہم ایک مشکل دورانیے میں ہیں،الیکشن کو دو تین ماہ کے لیے ملتوی کر دینا چاہئیے،معروف کالم نگار منصور آفاق کا کالم میں تبصرہ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ جون 17:31

عمران خان کی زندگی کو خطرہ؛ انتخابات تین ماہ متلوی کیے جائیں
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔22 جون 2018ء) معروف کالم نگار منصور آفاق کا اپنے ایک کالم' امیدوں کا اکیلا چراغ، عمران خان " میں کہنا ہے کہ اس وقت دشمن کے راستے میں صرف ایک رکاوٹ ہے جسےعمران خان کہتے ہیں۔ یہ وہ واحد لیڈر ہیں جو دشمنوں کے تمام عزائم خاک میں ملا سکتے ہیں۔ اُن کے لئے مسئلہ یہ ہے کہ لبرلز عمران خان پرتنگ نظر ہونے کا الزام نہیں لگا سکتے۔

مدینے کی گلیوں میں ننگے پائوں پھرنے والے کو کوئی مذہب دشمن قرار نہیں دے سکتا۔ ایسا پس منظر رکھنے والا لیڈر پورے ایمان کے ساتھ افواج پاکستان کے ساتھ کھڑ ا ہے۔بے شک اس وقت عمران خان فوج کی طرف جانے والے ہر وار کو اپنی کشادہ چھاتی پر سہہ رہے ہیں۔ سو اُن کی زندگی کو بے پناہ خطرات لاحق ہیں ،اُن کی کردار کُشی کی مہم بھی پورے زور و شور سے جاری ہے۔

(جاری ہے)

حتی کہ سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو بھی میدان لایا جا چکا ہے۔دراصل دنیا کوانتخابات میں عمران خان کی کامیابی یقینی لگ رہی ہے اوریہ بھی معلوم ہے کہ اگر عمران خان وزیراعظم بن گئے تو پھر پاکستان کو ترقی کرنے سےکوئی نہیں روک سکتا۔ ہم ایک مشکل دورانیے میں ہیں۔ ہمیں اِس عرصہ ہولناک سے بڑی احتیاط کے ساتھ گزارنا ہوگا۔ میرا تو مشورہ یہی ہے کہ دو تین ماہ کے انتخابات ملتوی کر دئیے جائیں۔

۔یاد رہے ملک بھر میں عام انتخابات کا اعلان 25جولائی کو کیا گیا ہے اور کہا جا رہا ہے کہ یہ انتخابات ملکی تاریخ کے مہنگے ترین انتخابا ت ہو گے۔ ایک رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ 25 جولائی 2018 ء کو ہونے والے عام انتخابات پاک فوج کی زیر نگرانی ہوں گے۔ جب کہ عام انتخابات کے دوران سیکیورٹی خدشات بھی موجود ہیں جس کے پیش نظر سیکیورٹی فورسز 22جولائی اتوار کے روز ہی اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں گی۔

پنجاب میں چھ ہزار پولنگ اسٹیشن حساس قرار دئیے جا چکے ہیں۔ پنجاب سمیت ملک بھر میں کے حساس پولنگ اسٹیشنوں پر کلوز سرکٹ کیمرے بھی لگوائے جائیں گے۔عام انتخابات میں سیکیورٹی کے حوالے خاص انتظامات کیے گئے ہیں۔ 25 جولائی 2018 کو ہونے والے عام انتخابات ملکی تاریخ کے سب سے مہنگے اور سب سے بڑے انتخابات ہوں گے۔2018کے انتخابات کے حوالے سے الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ 2018کے انتخابی اخراجات کا تخمینہ21ارب ہے۔