پاکستان سپر لیگ فور میں ایک ٹیم کم ہونے کا خطرہ پیدا ہو گیا

ایک فرانچائز کی جانب سے واجبات کی عدم ادائیگی اور مسلسل ٹال مٹول جاری، فرنچائزڈ کے کئی کھلاڑیوں کو گذشتہ سیزن کے معاوضوں کی ادائیگی بھی نہیں ہوسکی

جمعہ جون 20:34

پاکستان سپر لیگ فور میں ایک ٹیم کم ہونے کا خطرہ پیدا ہو گیا
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) پاکستان سپرلیگ ((پی ایس ایل ) کے اگلے ایڈیشن 2019ء میں ایک فرنچائزڈ ٹیم کم ہونے کا خطرہ بڑھتا جارہا ہے جس کی وجہ واجبات کی عدم ادائیگی اور مسلسل ٹال مٹول ہے جس کی وجہ سے اس فرنچائزڈ کے کئی کھلاڑیوں کو گذشتہ سیزن کے معاوضوں کی ادائیگی بھی نہیں ہوسکی ہے۔ واجبات کی ادائیگی کیلئے پاکستان کرکٹ بورڈ نے فرنچائزڈ مالکان کو ڈیڈ لائن دینے کے علاوہ معائدہ منسوخ کرنے کی دھمکی بھی دی تھی لیکن اس کا فرنچائزڈ حکام پر کوئی اثر نہیں پڑا اور معاملات بدستور زیرالتواء ہیں۔

پی سی بی حکام تاحال اس فرنچائزڈ کا نام منظر عام پر لانے سے گریزاں ہیں۔ واضع رہے کہ پی ایس ایل 2018ء میں کو کئی ماہ گزر جانے کے باوجود لیگ کی ایک فرنچائزڈ ابھی تک چھ لاکھ ڈالرز کی نادہندہ ہے جبکہ متعلقہ فرنچائزڈ کے کھلاڑیوں کو ادا کی جانے والی رقم کا چیک بھی پاکستان کرکٹ بورڈ کو موصول نہیں ہوا ہے۔

(جاری ہے)

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ایک اعلیٰ افسر نے امید ظاہر کی ہے کہ فرنچائزڈ جلد واجبات ادا کردے گی۔

ہم نے فرنچائزڈ کو ڈیڈ لائن نہیں دی ہے البتہ جلد ازجلد پیسے ادا کرنے کی ہدایت کی تھی۔ امید ہے کہ فرنچائزڈ اپنے وعدے کی پاسداری کرے گی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ فرنچائزڈ کی جانب سے معاوضے کی ادائیگی نہ ہونے کی وجہ سے ان ٹیموں کے کھلاڑیوں کو میچ فیس اور معاہدے کی رقوم میں ادائیگی تاخیر کا شکار ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے واضع طور پر کہا کہ معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے فرنچائز نے ادائیگی میں تاخیر کی ہے اگر یہ رقم ادا نہ کی تو 21دن کا نوٹس دے کر معاہدہ ختم کیا جاسکتا ہے جبکہ بورڈ قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکتھا ہے۔

بورڈ اس معاملے میں ڈیڈ لائن دینے سے گریز کررہا ہے اور قانونی چارہ جوئی کے بجائے معاملات افام و تفیم سے حل کرنا چاہتا ہے۔ اگر فرنچائزڈ کی جانب سے واجبات ادا نہ کئے گئے تو بورڈ کی جانب سے معاہدہ ختم منسوخ ہوجانے کے سبب پی ایس ایل کے اگلے ایڈیشن میں ایک ٹیم کی کمی بھی ہوسکتی ہے جس سے لیگ کا امیج بری طرح متاثر ہوسکتا ہے۔