لاہور ہائیکورٹ ، ایڈووکیٹ جنرل آفس کے دس اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو عہدے سے ہٹانے کیخلاف درخواست پر نگران حکومت کی ہدایت پر جاری نوٹیفکیشن معطل

دس اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کوبحال کرتے ہوئے سیکرٹری محکمہ قانون کو نوٹس جاری

جمعہ جون 21:33

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے ایڈووکیٹ جنرل آفس کے دس اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو عہدے سے ہٹانے کیخلاف درخواست پر نگران حکومت کی ہدایت پر جاری نوٹیفکیشن معطل کر دیا عدالت نے دس اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کوبحال کرتے ہوئے سیکرٹری محکمہ قانون کو نوٹس جاری کر دئیے تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی اکبر قریشی نے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو ہٹانے کیخلاف درخواست پر سماعت کی اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کی جانب سے شہزاد شوکت ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے درخواست گزار وکیل نے موقف اختیار کیا کہ نگران حکومت کو اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو ہٹانے کا اختیار حاصل نہیں ہے وکیل نے بتایا کہ نگران حکومت نے غیر قانون طور پر اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو ہٹایا ہے درخواست گزار وکیل نے نشاندہی کی کہ اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل کو قانون کے مطابق باقاعدہ سکروٹنی اور انٹرویو کے بعد تعینات کیا گیا ہے درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کہ عدالت نگران حکومت کا نوٹیفیکیشن کالعدم قرار دے اسسٹنٹ ایڈوکیٹ جنرل کو بحال کرنے کا حکم دے عدالت نے سیکرٹری محکمہ قانون کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 2 ہفتوں میں جواب طلب کر لیا ہے۔