گوادر میں رمضان المبارک سے بجلی ناپید ہے ، شہر کے باسی شدید ذہنی کوفت کا شکار ہیں ،کہدہ بابر

جمعہ جون 23:00

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے انسداد منشیات کے چیئرمین کہدہ بابر نے گوادر میں بجلی کی عدم فراہمی اور عوام کی مشکلات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ گوادر جوکہ سی پیک کا شہر ہے میں رمضان المبارک سے بجلی ناپید ہے جس کی وجہ سے شہر کے باسی شدید ذہنی کوفت کا شکار ہیں ، نگران وزیراعظم سے اپیل ہے کہ وہ اس صورتحال کا نوٹس لیں اگر نوٹس نہیں لیا گیا تو میں وزیراعظم ہاؤس کے سامنے احتجاجی دھرنا دوں گا یہ بات انہوں نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی سینیٹر کہدہ بابر نے کہا کہ رمضان کے بابرکت مہینے میں بھی گوادر کے عوام کو بجلی میسر نہیں تھی جس کی وجہ سے ان کی زندگی اجیرن بن گئی ہم نے بارہا یہ معاملہ متعلقہ حکام بالا کے سامنے رکھا لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ، حالت یہ ہے کہ عید اور عید کے بعد ابھی تک صورتحال جوں کا توں ہے جبکہ گوادر کو بجلی بھی ہمسایہ ملک ایران سے فراہم کی جارہی ہے اسکے باوجود لوڈشیڈنگ سمجھ سے بالاتر ہے ،انہوں نے مزید کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ گوادر میں بجلی کا نظام بھی درہم برہم ہے اٴْسے بھی درست کرنے کی ضرورت ہے میں یہ معاملہ سینیٹ میں بھی اٹھا رہا ہوں اور نگران وزیراعظم سے نوٹس لینے کی اپیل بھی کررہا ہوں گوادر سی پیک کا شہر ہے سی پیک کی اہمیت سے سب واقف ہیں ایسے بڑے معاشی پراجیکٹ سٹی شہر کے عوام کا بجلی اور پانی جیسی بنیادی ضروریات سے محروم ہونا لمحہ فکریہ ہے انہوں نے کہا اگر نگران وزیراعظم نے بھی گوادر میں بجلی کی عدم فراہمی کا نوٹس نہیں لیا تو مجھے مجبوراً احتجاج کرتے ہوئے وزیراعظم ہاؤس کے سامنے دھرنا دینا ہوگا۔