سعودی عرب ،سلامتی کو نقصان پہنچانے کے الزام میں 17افرادگرفتار

گرفتارافراد حد سے زیادہ آزاد خیالی کو فروغ دینے میں کوشش کر رہے تھے،حکومتی ذرائع

ہفتہ جون 11:55

ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 جون2018ء) سعودی عرب میں ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے اصلاحاتی عمل میں تسلسل پایا جاتا ہے۔ تاہم سعودی حکومت نے انسانی حقوق کے 17کارکنوں کو حراست میں بھی لیا ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق رواں مہینے کے دوران حکومت نے سلامتی کو نقصان پہنچانے کے الزام کے تحت سترہ افراد کو حراست میں لیا ہے۔

(جاری ہے)

بعض حکومتی ذرائع کے مطابق جن افراد کو حراست میں لیا گیا کہ وہ حد سے زیادہ آزاد خیالی کو فروغ دینے میں کوشش کر رہے تھے۔ سعودی حکومت کے ناقدین کا خیال ہے کہ گرفتار کیے گئے افراد بنیادی طور پر انسانی حقوق کی سرگرمیوں اور خاص طور پر خواتین کے حقوق کے فعال کارکن ہیں۔ ان میں گرفتار شدگان میں شامل چار خواتین کو رہا کر دیا گیا تھا۔