سیاسی جماعتوں کے رہنمائوں کو فول پروف سکیورٹی فراہم کرنے کا فیصلہ ،سر کردہ رہنمائوں کو باکس سکیورٹی مہیا کی جائے گی‘حسن عسکری

حساس پولنگ سٹیشنز پر امن عامہ کی فضا برقرار رکھنے کیلئے خصوصی انتظامات کئے جائیں گے، سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے نگرانی ہوگی انتخابی مہم کے دوران سیاسی جماعتوں کیلئے سکیورٹی پلان وضع کر لیا، جلسے اورجلوسوں کو مرتب کردہ پلان کے تحت سکیورٹی دینگے ‘نگران وزیراعلیٰ پنجاب

ہفتہ جون 18:05

سیاسی جماعتوں کے رہنمائوں کو فول پروف سکیورٹی فراہم کرنے کا فیصلہ ،سر ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 جون2018ء) نگران وزیراعلیٰ پنجاب ڈاکٹر حسن عسکری کی زیرصدارت وزیراعلیٰ آفس میں اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا جس میںصوبے میں انتخابات کی تیاریوں کے انتظامات، سکیورٹی امور اور امن و امان کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میںسیاسی جماعتوں کے سرکردہ رہنمائوں کو فول پروف سکیورٹی فراہم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سرکردہ سیاسی رہنمائوں کو نقل و حرکت کے دوران باکس سکیورٹی مہیا کی جائے گی جبکہ الیکشن میں حصہ لینے والے امیدواروں کو بھی ضروری سکیورٹی دی جائے گی۔نگران وزیراعلیٰ ڈاکٹر حسن عسکری نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابی مہم کے دوران سیاسی جماعتوں کیلئے سکیورٹی پلان وضع کر لیا گیا ہے۔

(جاری ہے)

جلسے، جلوسوں اور ریلیوں کو بھی مرتب کردہ پلان کے تحت سکیورٹی دیں گے اورحساس پولنگ سٹیشنز پر امن عامہ فضا برقرار رکھنے کیلئے خصوصی انتظامات کئے جائیں گے اور پولنگ سٹیشنز کی سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے نگرانی ہوگی۔

نگران وزیر اعلیٰ نے ہدایت کہ کہ سی سی ٹی وی کیمرے مکمل طور پر فنکشنل ہونے چاہئیں اور کیمروں کے غیرفعال ہونے کی شکایت سامنے نہیںآنی چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ جلسے ،جلوسوں اور ریلیوں کیلئے مرتب کئے جانے والے لائحہ عمل پر من و عن عملدرآمد یقینی بنایا جائے اور جلسے اور جلوسوں میں شرکت کیلئے آنے والوں کی واک تھرو گیٹ کے ذریعے چیکنگ کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ عام انتخابات کا انعقاد اجتماعی و قومی ذمہ داری ہے۔آزادانہ اور شفاف الیکشن ہمارا فوکس ہے، سب کیلئے مساوی مواقع ہوں گے۔ نگران وزیر اعلیٰ نے کہا کہ شفاف الیکشن نگران حکومت کی کلیدی ذمہ داری ہے لہذاکئے گئے انتظامات اور عملی اقدامات کے درمیان تفاوت نہیں ہونی چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ بہترین انتظامیہ متوقع واقعات کے پیشگی تدارک کیلئے اقدامات کرکے اپنی پلاننگ بہتر کرسکتی ہے۔

نگران وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ انتخابی سامان کی ترسیل سخت حفاظتی انتظامات میں کی جائے اور پولنگ سٹاف کی سکیورٹی کے فول پروف انتظامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہاکہ پولنگ بوتھ اور بیلٹ باکسز کی حفاظت کو بھی یقینی بنائیں گے۔ پولنگ سٹیشن سے ریٹرننگ افسر تک نتائج اور بیلٹ باکسز کی ترسیل میں تاخیر نہیں ہونی چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کے دوران پبلک مقامات اور عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے ضروری اقدامات کریں گے۔

نگران وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ انٹیلی جنس شیئرنگ کے نظام کو مزید موثر اور مربوط بنایا جائے اور سیاسی جماعتیں انتخابی محاذ آرائی اور تصادم سے گریز کریں اورماحول کو پرامن رکھا جائے۔ انتخابی مہم کے دوران ایک دوسرے کے خلاف ناشائستہ بیانات سے گریز کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد یقینی بنانا ہوگا۔

ڈاکٹر حسن عسکری نے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں اور دیگر محکموں کی مشترکہ کاوشیں ناگزیر ہیں۔ وقت کم اور چیلنج بڑا ہے لیکن عزم مضبوط ہو تو اس چیلنج سے کامیابی سے نمٹا جاسکتا ہے۔نگران وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ متعلقہ محکمے اور ادارے بہترین کوآرڈینیشن کے تحت فرائض سرانجام دیں۔انہوں نے کہا کہ سول اور عسکری اداروں کے درمیان موثر ہم آہنگی سے مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔

نگران وزیر اعلیٰ نے ہدایت کی کہ جنرل الیکشن کے دوران مون سون اور ممکنہ سیلاب کے خطرہ سے نمٹنے کیلئے پیشگی اقدامات کئے جائیں۔اجلاس کے دوران عام انتخابات کی تیاریوں کے لئے کئے جانے والے ا قدامات ،سکیورٹی امور اور امن وامان کی صورتحال کو بہتر بنانے کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی- نگران صوبائی وزراء ضیاء حیدر رضوی، شوکت جاوید، احمد وقاص ریاض،، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس،، ایڈیشنل چیف سیکرٹری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، سول اور عسکری اداروں کے اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔