امیدوار قومی اسمبلی سردار غلام عباس کے کاغذات نامزدگی منظور کیے جانے کے خلاف اپیل منظور

لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ نے این اے 64 کے امیدوار کو 25 جولائی کو اپنے روبرو طلب کرلیا

ہفتہ جون 22:44

چکوال (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 جون2018ء) لاہور ہائیکورٹ روالپنڈی بنچ نے این اے چونسٹھ سے امیدوار قومی اسمبلی سردار غلام عباس کے کاغذات نامزدگی منظور کیے جانے کے خلاف اپیل منظور کرتے ہوئے انہیں پچیس جولائی کو اپنے روبرو طلب کر لیا ہے،ریٹرننگ آفیسر حلقہ این اے چونسٹھ محمد اسلم بھٹی نے قاضی عمر ایڈووکیٹ اور جنرل سیکرٹری چکوال بار زعفران ذ وا لفی ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر اعتراضات مسترد کرتے ہوئے سردار عباس کے کاغزات نامزدگی منظور کر لیے جس کے خلاف مدعیان نے عدالت علیہ میں اپیل دائر کر دی گئی،پیٹیشنر کی طرف سے اعتراجات درج کیے گئے کہ سردار غلام عباس نے اپنے داخل کیے گئے گوشواروںمیںچودہ سو کنال اراضی ظاہر کی جبکہ کمپوٹرائزڈ لینڈ ریکارڈ میں یہ زمین سولہ سو کنال ہے اس کے علاوہ انہوں نے اپنی اہلیہ کے اثاثے بھی ظاہر نہیں کیے جبکہ سردار عباس کروڑوں رپے کے مالک ہیں دو دفعہ ضلعی ناظم رہے ہیں سنکڑوں گائے بھینسیں جو ان کے فارم ہائوسز میں موجودہیں کے مالک ہیں مگر ایک روپے کا ٹیکس دینا تو درکنا ر ان کا این ٹی این نمبر ہی نہیں ہے،انہوں نے اعتراض داخل کیا سردار عباس کے بہاولپور کے بنک میں موجود اکائنٹ کی اسٹیٹمنٹ نکلوائی جائے کیوں کہ سردار عباس کروڑوں روپے کے مالک ہیں ،جن کا کہیں بھی ذکر نہیں کیا گیا،سردارعباس کی طرف سے امیر بٹ ایڈووکیٹ پیش ہوئے لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ کے جسٹس عباد الرحمٰن لودھی نے اپیل سماعت کے لیے منظور رتے ہوئے سردار عباس کو پچیس جون کو طلب کر لیا۔