بھارت میں 5 مسلمانوں کو گاؤ رکھشا کے نام پر قتل کردیا گیا

اتر پردیش میں پولیس کی موجودگی میں انتہاپسند ہندوؤں نے مسلم شخص پر تشدد کیا جو بعد میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا

ہفتہ جون 23:04

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 جون2018ء) بھارت میں گاؤ رکھشا کے نام پر انتہا پسند ہندو آپے سے باہر ہوگئے، بارہ روز کے دوران 5 مسلمان گاؤ رکھشا کی بھینٹ چڑھ گئے۔بھارت میں انتہا پسندوں کی غنڈہ گردی حد سے بڑھ گئی، گاؤ رکھشا کے نام پر مسلمانوں کو تشدد کا نشانہ بنایا جانا روز کا معمول بن گیا ہے۔

(جاری ہے)

ریاست اتر پردیش کے ضلع ہاپڑ میں مسلمانوں پر تشدد کرنے کی ایک اور وڈیو سامنے آئی جس میں انتہا پسندوں کو 65 سالہ شخص پر تشدد کرتے ہوئے دیکھا گیا۔

دو روز قبل ہاپڑ میں گائے ذبح کرنے کے الزام میں قاسم نامی 45 سالہ شخص کو تشدد کرکے قتل کردیا گیا تھا ،ْ دوسرا شخص شدید زخمی ہوگیا تھا ،ْاترپردیش میں پولیس اہلکاروں کے سامنے مسلمانوں پر تشدد کیا گیا تھا جس پر یوپی پولیس نے معافی مانگی ہے۔پولیس نے واقعے میں ملوث دو افراد کو گرفتار کرنے کا دعویٰ بھی کیا ہے۔بھارت میں گزشتہ 12 روز میں 5 مسلمان گائے کے تحفظ کا بیڑہ اٹھانے والے انتہا پسند ہندوؤں کی بھینٹ چڑھائے جاچکے ہیں۔

متعلقہ عنوان :