اگلے ڈیڑھ ہفتے میں پارٹی منشور کراعلان کردیں گے،عمران خان

پی ٹی آئی جیسا منشورکسی جماعت کا نہیں ہوگا، میرٹ پرپارٹی ٹکٹس دیے، ٹکٹس نہ ملنے والوں سے معذرت، شریف فیملی اور زرداری نے رشتہ داروں کوٹکٹس دیے،نوازشریف نے300ارب روپے کی کرپشن کی ہے،کرپشن روکنے کیلئے ادروں کومضبوط کریں گے۔میانوالی میں انتخابی جلسے سے خطاب

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار جون 18:57

اگلے ڈیڑھ ہفتے میں پارٹی منشور کراعلان کردیں گے،عمران خان
میانوالی(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔24 جون 2018ء) : پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ اگلے ڈیڑھ ہفتے میں پارٹی منشور کراعلان کردیں گے،،پی ٹی آئی جیسا منشور کسی جماعت کا نہیں ہوگا، میرٹ پرپارٹی ٹکٹس دیے،ٹکٹس نہ ملنے والوں سے معذرت،شریف فیملی اور زرداری نے رشتہ داروں کوٹکٹس دیے،،نوازشریف نے300ارب روپے کی کرپشن کی ہے،،کرپشن روکنے کیلئے ادروں کومضبوط کریں گے۔

انہوں نے اپنے آبائی علاقے میانوالی میں انتخابی مہم کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 2018ء کی الیکشن مہم کا آغاز میانوالی سے شروع کررہاہوں۔آج میانوالی اس لیے آیاہوں کہ میانوالی وہ ضلع تھا جومیرے ساتھ تب کھڑا ہوا،جب پاکستان میں میرے ساتھ کوئی کھڑا نہیں تھا۔جب لوگ تحریک انصاف کو دیوانے کا خواب کہتے تھے۔

(جاری ہے)

کہتے تھے عمران خان سیاست نہیں آتی ہے۔

2002ء کے الیکشن میں ایک سیٹ جیتی تھی۔ابھی میں 1997ء کے کارکنان کومل رہا تھا جوتب چھوٹے چھوٹے تھے اب سفید بال آگئے ہیں۔اگر میں وہ سیٹ نہ جیتتاتوپتا نہیں تحریک انصاف بنتی یا نہ بنتی۔لیکن آج پاکستان کی سب سے بڑی جماعت تحریک انصاف ہے۔انہوں نے کہا کہ میں میانوالی کوخراج تحسین پیش کرنا چاہتاہوں۔میں نے جو2002ء میں وعدے کیے تھے ہم میانوالی کونہیں ملک کوبدلیں گے۔

پاکستان ایساملک بنے گا کہ لوگ باہر سے نوکریاں ڈھونڈنے آئیں گے۔انہوں نے کہا کہ مجھ پرٹکٹس دینے کیلئے بڑا پریشر تھا۔میرے میانوالی میں رشتہ دار سب ٹکٹ مانگ رہے تھے ۔فرق کیا ہے ۔شریف فیملی اور آصف زرداری نے رشتہ داروں کوٹکٹس دیے۔لیکن ہم نے سروے کروا کے ٹکٹس دیے۔انہوں نے کہا کہ جن کارکنان کوٹکٹس نہیں ملے۔مجھے تکلیف ہے جن لوگوں کوٹکٹس نہیں ملے۔

میں ان سب سے معذرت چاہتا ہوں۔ساڑھے چار ہزار لوگوں نے ٹکٹس کیلئے اپلائی کیا۔لیکن ٹکٹس صرف 500لوگوں کودینے تھے۔انہوں نے کہا کہ کس نے کہا تھا تین مہینے میں لوڈشیڈنگ ختم نہ ہوئی تومیرانام بدل دینا میرا نام شہبازشریف نہیں ہوگا۔دونوں شریف بھائیوں نے کہا کہ ہم نے لوڈشیڈنگ ختم کردی ہے؟ شہبازشریف کہتا کہ ہم نے بجلی بنا دی۔اب نگراں حکومت جانے۔

شہبازشریف بجلی بناکرشاپنگ بیگ میں لے گئے؟احسن اقبال باربار کہتا تھا ہم تجربہ کار ٹیم لے کرآرہے ہیں۔ہم ملک کے مسئلے حل کریں گے۔ 40ارب روپے کے اشتہار دیے ۔۔پاکستان کی تاریخ میں اتنا قرض نہیں تھا جتنا یہ دونوں بھائی قرض چڑھا کرگئے۔2013ء میں پاکستان کاقرض 13ہزار ارب ، جبکہ 5سالوں میں قرض 27ارب ہوگیا ہے۔2008ء تک 60سالہ تاریخ میں جوقرضہ تھا وہ صرف 6ہزار ارب تھا۔

آج ڈالر125روپے کا ہوگیا ہے۔جس سے قوم غریب اور یہ لوگ امیرہوگئے ہیں۔۔نوازشریف اور شہبازشریف کے بچے ارب پتی ہیں۔لیکن قوم قرضوں میں ڈوب گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ شریفوں نے دس سالوں میں ملک کوکنگال کردیا ہے۔36ہزار ارب روپے پاکستان کانقصان کیا ہے۔یہ پیسا عوام کی جیبوں سے نکلے گا۔کیونکہ ہرچیز پرٹیکس لگے گا۔۔کرپشن کامطلب عوام کا پیسا چوری ہوتا ہے۔

پھر یہ ملک کیسے ترقی کرسکتا ہے؟نوازشریف اور اس کے بیٹوں کے اوپر300ارب روپے کرپشن کا الزام ہے۔یعنی 30ہزار کروڑ روپے ہیں۔سابق وزیراعظم نوازشریف کے بیٹے پاکستان سے بھاگے ہوئے ہیں۔شہبازشریف کے پاس 56کمپنیاں ہیں۔ہر کمپنی میں کرپشن کی جاتی ہے۔۔اسحاق ڈار دبئی میں ، خواجہ سعد رفیق پیراگون سٹی میں کرپشن،، خواجہ آصف دبئی کی کمپنی میں نوکری کرتا رہا۔