نگران وفاقی وزیر برائے ایوی ایشن ڈویژن عبد اللہ حسین ہارون کا نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ کا اچانک دورہ

ایئر پورٹ کے باہر ٹول پلازہ کی وجہ سے مسافروں در پیش مشکلات حل کرنے کیلئے حکومت سے بات کروں گا، عبد اللہ حسین ہارون

اتوار جون 22:30

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 جون2018ء) نگران وفاقی وزیر برائے ایوی ایشن ڈویژن عبد اللہ حسین ہارون نے کہا ہے کہ پاکستان کے سب سے بڑے نیو اسلام آبا دا نٹرنیشنل ایئر پورٹ پر مسافروں کو بین الاقوامی معیار کے مطابق جدید سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے حکومت تمام تر اقدامات اٹھا رہی ہے۔ اسلام آباد ایئر پورٹ کے باہر این ایچ اے ٹول پلازہ کی وجہ سے مسافروں کو پیش آنے والی مشکلات کو حل کرنے کیلئے حکومت سے فوری بات کروں گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیو اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے اچانک دورے اور معائنہ کے دوران کیا۔ اس موقع پر ایوی ایشن ڈویژن، سول ایوی ایشن اتھارٹی، اورپی آئی اے کے متعلقہ حکام بھی موجود تھے۔ وفاقی وزیر نے اپنے دورے کے دوران ائیرپورٹ کے مختلف حصوں کا دورہ کیا اور مسافروں کو دی جانے والی سہولیات کا بھی معائنہ کیا، انہوں نے نیو ائیرپورٹ پر فلائٹ آپریشن کا بھی جائزہ لیا۔

(جاری ہے)

ائیر پورٹ منیجر کی جانب سے عبد اللہ حسین ہارون کو ائیر لائنز اور مسافروں کو دی جانے والی سہولیات کے حوالے سے ایک تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی جبکہ چیف سیکورٹی آفیسر اے ایس ایف کی جانب سے سیکورٹی کے حوالے سے بھی بتایا گیا۔وفاقی وزیر کو بتایا گیا کہ 85 بلین کی لاگت سے تکمیل ہونے والا جدید سہولیات سے آراستہ پاکستان کا سب سے بڑا ائیر پورٹ بین الاقوامی معیار سے آراستہ ہے ۔

اس موقع پروفاقی وزیر نے ائیر پورٹ کے مختلف حصوں کا معائنہ کیا اور ہدایت کی کہ مسافروں کو جدید سہولیات کی فراہمی میں کسی قسم کی کوتاہی نہیں ہونی چایئے۔ وفاقی وزیر نے ائیر پورٹ کے باہر این ایچ اے ٹول پلازہ کی وجہ سے مسافروں کو پیش آنے والی مشکلات کا بھی نوٹس لیا اور یقین دہانی کرائی کے وہ اس مسئلے کے فوری حل کیلیے حکومت سے بات کریں گئے۔ انہوں نے مزید ہدایت کی کے تمام ائیر لائینز کے آپریشنز کو یقینی بنانے کیلیے انکو بھی سہولیات کی فراہمی یقینی بنائی جائے، انہوں نے کہا کہ مسافروں کو تمام تر سہولیات کی فرہامی کو ہر ممکن یقینی بنایا جا رہا ہے ، وفاقی وزیر نے ائیر پورٹ پر مسافروں کو دی جانے والی سہولیات اور فلائیٹ آپریشن پر اطمینان کا اظہار کیا۔

متعلقہ عنوان :