مقبوضہ کشمیرمیںنوجوانوں کی شہادت پروادی میں مکمل ہڑتال کی گئی

علاقے میں تمام دکانیں ، کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند اور سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل احتجاجی مظاہروں کو روکنے کے لیے سخت پابندیاں کی گئی ہیں ،موبائل ، انٹرنیٹ اور ٹرین سروسز معطل رہی

پیر جون 12:58

سرینگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں پلوامہ ، اسلام آباد اور کولگام میںنوجوانوں کی شہادت پر پیر مکمل ہڑتال کی گئی۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ، میرواعظ عمرفاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی تھی۔علاقے میں تمام دکانیں ، کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند اور سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل رہی۔

(جاری ہے)

بھارتی فورسز نے گزشتہ روز ضلع کولگام کے علاقے قیموہ میں محاصرے اور تلاشی کی ایک کارروائی کے دوران دونوجوانوں کوجبکہ احتجاجی مظاہرین پر فائرنگ کرکے ایک نوجوان کو شہید کیا تھا۔ قابض انتظامیہ نے احتجاجی مظاہروں کو روکنے کے لیے وادی کشمیر بالخصوص جنوبی کشمیر میں سخت پابندیاں عائد کرررکھی ہیں اور موبائل فون اورانٹرنیٹ سروسز معطل کردی ہیں۔ قابض انتظامیہ نے علاقے میں ٹرین سروس بھی معطل کردی۔۔بھارتی پولیس نے احتجاجی مظاہروں کی قیادت سے روکنے کے لیے جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کو گرفتار کرلیا ہے۔