اسرائیلی مظالم کی انتہا، فلسطینیوں کے جانی نقصان کے ساتھ ساتھ معاشی قتل عام کا آغاز

فلسطینی شہر نابلوس میں کھڑی فصلیں نذرآتش، وسیع پیمانے پر فصلیں اور باغات خاکستر

پیر جون 13:54

نابلوس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) اسرائیل نے معصوم بے گناہ فلسطینیوں کے جانی نقصان کے ساتھ ساتھ معاشی قتل عام شروع کر دیا، فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر نابلوس میں فلسطینیوں کی فصلیں(زیتون اور پھل دار باغات) نذرآتش کر دیں،وسیع پیمانے پر فصلیں اور باغات خاکستر ہو گئے۔ بین الاقوامی ذرائع کے مطابق اسرائیل نے غزہ کے جانب سے جلتے ہوئے کاغذی جہازوں کا انتقام مقبوضہ غرب اردن میں فلسطینیوں کی فصلیں نذرآتش کرکے لے لیا ہے۔

(جاری ہے)

فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے شمالی شہر نابلوس میں جبل سلمان الفارسی کے مقام پر یہودی شرپسندوں نے فلسطینیوں کے کھیتوں میں کھڑی فصلوں کو آگ لگا دی جس کے نتیجے میں فصلیں جل کر خاکستر ہوگئیں۔۔یہودی کالونی کے آباد کاروں نے بورین قصبے کی عنو کے مقام پر موجود زرعی اراضی،زیتون کے باغات اور پھل دار باغات میں آگ لگا دی،جس کے نتیجے میں فصلیںجل کر خاکستر ہوگئی۔فلسطینی اتھارٹی اور اسرائیل کے فائر بریگیڈ کے عملے کو فوری آگاہ کیا گیا مگر ریسکیو ٹیمیں دانستہ طورپر تاخیر کی مرتکب ہوئیں اور ان کے پہنچنے تک وسیع پیمانے پر فصلیں اور باغات جل کر خاکستر ہوگئے تھے۔