برطانوی سائنس دانوں نے نل سے پانی کے قطرے گرنے کی آواز روکنے کا طریقہ دریافت کر لیا

پیر جون 14:10

لندن ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) برطانیہ کی کیمبرج یونیورسٹی کے سائنس دانوں نے نل سے پانی کے قطرے گرنے کی ناگوار آواز ٹپ ٹپ کوروکنے کا طریقہ دریافت کر لیا ہے،اب یہ آواز آپ کی سماعتوں پر گراں نہیں گزرے گی۔۔جرمن نشریاتی ادارے کے مطابق کیمبرج یونیورسٹی کے محققین کی ایک ٹیم کی جانب سے شائع کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پانی کے قطرے گرنے سے آواز پیدا ہونا، پانی پر قطرے کا گرنا سے پیدا نہیں ہوتی، نہ ہی یہ قطرہ تالاب میں پھینکے جانے والے پتھر کی طرح آواز کا سبب بنتا ہے، بالکل اس آواز کا سبب یہ ہے کہ ٹپکنے والا قطرہ جب موجود پانی کی سطح سے ٹکراتا ہے، تو سطح کو نیچے کی جانب دباتا ہے اور اس سوراخ نما نشیب کے تہہ میں پانی کا ایک چھوٹا سا بلبلا پیدا ہوتا ہے۔

(جاری ہے)

ہوا کا یہی بلبلا جو نیچے پھنس جاتا ہے، کسی پسٹن کی طرح پانی کو ہٹاتا ہے اور فضا میں آواز پیدا ہوتی ہے۔سائنس دانوں نے اس تحقیق کے لیے انتہائی تیزرفتار کیمروں اور حساس ترین مائیکروفونز کا استعمال کیا۔ اس تحقیق میں شامل پی ایچ ڈی طالب علم سیم فیلپ کے مطابق، ’’ہم نے اس دوران پہلی مرتبہ قطرے کا پانی کی سطح سے ٹکراؤ اور وہاں بلبلوں کی پیدائش، ماہیت اور ردعمل کا تفصیلی مشاہدہ کیا۔

یہیں ہمیں دیگر آوازوں کے ساتھ وہ ٹپ ٹپ کی آواز کے اصل مبنع کا علم ہوا۔یونیورسٹی آف کیمبرج نے اس مطالعے کے حوالے سے یوٹیوب پر ایک ویڈیو بھی جاری کی ہے۔ اس آواز کو ختم کرنے کے لیے سائنس دانوں نے نہایت آسان طریقہ دریافت کیا ہے۔ محققین کے مطابق اگر نل کے نیچے پانی کے برتن میں کچھ ڈش واشر صابن ڈال دیا جائے، تو جمع پانی کے سطحی تناؤ کو کم کیا جا سکتا ہے اور اس کی وجہ سے ٹپ ٹپ کی آواز سے چھٹکارا پایا جا سکتا ہے۔

متعلقہ عنوان :