سردار پٹیل کشمیر کو پاکستان کے حوالے کرنا چاہتے تھے، کانگریسی رہنما کا دعویٰ

قیام امن کے لئے ضروری ہے بھارت پاکستان مابین کشمیر کی سرحد تبدیل نہ ہو،سیف الدین سوز سوز کا بیان سردار پٹیل کی بے عزتی ہے ، کانگریس کو ان کے خلاف کارروائی کرنی چاہئے،بی جے پی لیڈر شاہنواز حسین

پیر جون 16:59

سری نگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) کانگریسی رہنما سیف الدین سوز نے کشمیرکے مسئلہ پر متنازعہ بیان دیتے ہوئے دعوی کیا کہ سردار پٹیل پاکستان کو کشمیر دینا چاہتے تھے، قیام امن کے لئے ضروری ہے بھارت پاکستان مابین کشمیر کی سرحد تبدیل نہ ہو،سوز کا بیان سردار پٹیل کی بے عزتی ہے ، کانگریس کو ان کے خلاف کارروائی کرنی چاہئے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق کانگریس کے رہنما سیف الدین سوز نے کشمیرکے مسئلہ پر متنازعہ بیان دیتے ہوئے دعوی کیا کہ سردار پٹیل پاکستان کو کشمیر دینا چاہتے تھے ، لیکن جواہر لال نہرو اس کے حق میں نہیں تھے۔

ان کا دعوی ہے کہ پٹیل آخری دم تک کشمیر پاکستان کے حوالے کرنا چاہتے تھے ۔ سوز نے یہ بھی کہا کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان امن کیلئے ضروری ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان کشمیر کی سرحد تبدیل نہ ہو۔

(جاری ہے)

میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان امن قائم کرنے کیلئے حل یہی ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان کشمیر کی سرحد تبدیل نہ ہو۔

کشمیر سے متعلق ان کی آنے والی کتاب پرتنازع کے سلسلے میں کہا کہ کتاب میں کوئی ایسی بات نہیں ہے ، جس سے کانگریس ناراض ہو۔ سوز نے کہا کہ میں نے کتاب میں لکھا ہے کہ سردار پٹیل چاہتے تھے کہ کشمیر پاکستان کو دے دیا جائے، لیکن نہرو کشمیر کوبھارت میں رکھنے کے حق میں تھے۔ آخری دم تک پٹیل چاہتے تھے کہ کشمیر پاکستان کو دے دیا جائے۔ادھر بی جے پی لیڈر شاہنواز حسین نے اس معاملہ پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس سوز کے بیان سے کنارہ کشی اختیار نہیں کرسکتی۔ سوز کا بیان سردار پٹیل کی بے عزتی ہے ، کانگریس کو ان کے خلاف کارروائی کرنی چاہئے۔

متعلقہ عنوان :