احتساب کا عمل سندھ میں بھی ہونا چاہیے، ارباب غلام رحیم

یہاں پر جو کرپشن کرنے کے ماسٹر تھے ان سے کوئی احتساب نہیں کر رہا ہے اور وہ الیکشن میں بھرپور طریقے سے حصہ لے رہے ہیں، سابق وزیراعلیٰ سندھ

پیر جون 17:01

ٓٹنڈو محمد خان (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) سابق وزیر اعلی سندھ اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے مرکزی رہنما ارباب غلام رحیم نے کہا ہے کہ احتساب کا عمل سندھ میں بھی ہونا چاہیے، یہاں پر جو کرپشن کرنے کے ماسٹر تھے ان سے کوئی احتساب نہیں کر رہا ہے اور وہ الیکشن میں بھرپور طریقے سے حصہ لے رہے ہیں، یہ بات انہوں نے ٹنڈو محمد خان میں جی ڈی اے کے پی ایس 68پر نامزد امیدوار میر سجاد علی تالپور کی رہائشگاھ پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی، ارباب غلام رحیم نے کہا کہ کھربوں، کروڑوں روپوں کا بلاول ہائوس کے اثاثے چالیس لاکھ روپے ظاہر کئے گئے ، اتنی تو ان کی ایک دیوار کی قیمت ہوگی، بلاول ہائوس ایک گھر پر نہیں بلکہ کئی گھروں پر مشتمل ہے، انہوں نے کہا کہ سندھ میں پیپلزپارٹی کی مخالف جو بھی جماعت ہے ان سے الیکشن کے دوراں اتحاد کے سلسلے میں بات چیت ہو رہی ہے، انہوں نے کہا کہ جی ڈی اے کے جانب سے ضلع ٹنڈو محمد خان میں قومی اسیمبلی کی نشست 228 اور پی ایس 69 پر آزاد امیدوار عبدالرحیم کاتیار اور پی ایس 68 پر میر سجاد علی تالپور ہمارے منتخب نمائندے ہیں، انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے اپنے دس سالہ دورے اقتدار میں عوام کو سوائے دھوکے اور جھوٹے وعدوں کے سوا کچھ بھی نہیں دیا، سندھ میں بے شمار کرپشن کر کے سندھ کو پچاس سال پیچھے چھوڑ دیا ہے، عوام اب ان کے جھوٹے نعروں پر نہیں آئے گی، اس موقع پر میر راجا شوکت تالپور، میر فرقان تالپور، میر نسیم تالپور، میر سرفراز تالپور، سید مختیار شاہ، کمال نوناری ، صدیق سموں اور دیگر بھی موجود تھے۔