آن لائن خرید و فروخت کے رجحان میں کئی گنا اضافہ

آمدنیوں میں اضافہ، مواصلاتی رابطوں کی بہتری، انٹرنیٹ تک رسائی اور آن لائن بینکنگ، پاکستان میں ای-کامرس صارفین کی تعداد میں اضافے کا بڑا سبب ہے ،ْرپورٹ

پیر جون 17:24

آن لائن خرید و فروخت کے رجحان میں کئی گنا اضافہ
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) پرائس واٹر کوپر کی جانب سے گلوبل کنزیومر انسائٹ سروے برائے سال 2018 میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ دنیا بھر میں ہونے والی ریٹیل فروخت کا 10 فیصد حصہ انٹرنیٹ کے ذریعے ہونے والی خریداری پر مشتمل ہے اس حوالے سے مارکیٹ پرریسرچ کرنے والی کمپنی کی جانب سے لگائے گئے تخمینے کے مطابق سال 2017 میں دنیا بھرمیں ای-کامرس کے ذریعے ہونے والی فروخت 23 کھرب ارب ڈالر ریکارڈ کی گئی جو سال 2016 کے مقابلے میں 24.8 فیصد زائد تھی۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق پاکستان میں جنوری تا مارچ گھروں سے کی جانے والی آن لائن خریداری 4.4 ارب روپے رہی، اس بڑھتے ہوئے رجحان کی تصدیق اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے اعداد و شمار سے بھی ہوئی ہے۔اسٹیٹ بینک کے مطابق مالی سال 2018 کے دوسرے سہہ ماہی کے دوران آن لائن فروخت کنندگان کی تعداد 905 تھی جو تیسری سہ ماہی میں اضافے کے بعد 1 ہزار 23 ہوگئی تھی ا س حوالے سے مرکزی بینک نے کہا کہ آمدنیوں میں اضافہ، مواصلاتی رابطوں کی بہتری، انٹرنیٹ تک رسائی اور آن لائن بینکنگ، پاکستان میں ای-کامرس صارفین کی تعداد میں اضافے کا بڑا سبب ہے اس سلسلے میں اقوام متحدہ کی ایجنسی برائے اطلاعات و مواصلات کی جانب سے لگائے تخمینے کے مطابق انٹرنیٹ استعمال کرنے والے 4 کڑوڑ 46 لاکھ فعال صارفین میں انٹرنیٹ کے ذریعے خریداری کررنے والوں تعداد 22 فیصد ہے، جو 4 سال قبل محض 2 فیصد تھی اس حوالے سے مارکیٹنگ کنسلٹینسی فرم کیپائوس کے اعدادو شمار کے مطابق پاکستان میں اس وقت سوشل میڈیا استعمال کرنے والے فعال افراد کی تعداد تقریباً ساڑھے 3 کروڑ ہے، اور انٹرنیٹ کے ذریعے خریداری میں اضافے کے رجحان کا ایک بہٹ بڑا سبب سوشل میڈیا بھی ہے۔

(جاری ہے)

دوسری جانب آن لائن فروخت کرنے والے ادارے بڑی کامیابی سے سوشل میڈیا کے استعمال سے فائدہ اٹھارہے ہیں جس میں کپڑوں کے برانڈ مثلاً ثنا سفیناز، کھادی وغیرہ سے لے کر آن لائن مارکیٹس جیسا کے دراز ڈاٹ پی کے، او ایل ایکس سمیت دیگر فروخت کنندگان کی ایک طویل فہرست ہے اس سلسلے میں صرف گزشتہ برس ہی بلیک فرائی ڈے نامی سیل میں آن لائن فروخت کے ادارے دراز نے فروخت کے سارے ریکارڈ توڑتے ہوئے 3 ارب روپے سے زائد کا کاروبار کیا اس ضمن میں آن لائن مارکیٹ کے حوالے سے کی گئی ریسرچ میں یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ ’ انٹرنیٹ کے ذریعے خریداری کرنے والوں کے اعتماد میں قابل اطمینان اضافہ ہوا ہے جس کے باعث اب وہ کئی طرح کی مصنوعات آن لائن خریدتے ہیں ای کامرس کے سلسلے میں ضرورت اس امر کی ہے کہ ایک جامع ای-کامرس پالیسی مرتب کی جائے جس کے ذریعے ادائیگی کے طریقہ کار کو آسان کیا جاسکے اور اس قسم کے کاروباری سیکٹر کے میں ہم آہنگ قواعد نافذ ہوسکیں۔