میٹرنٹی ہسپتال ہشتنگری کے اضافی عملے کومولوی جی شفٹ کرنیکافیصلہ

ہسپتال کونزدیکی علاقوں سے آئے مریضوں کیلئے مخصوص کیاجائیگا، ضلع ناظم کے زیرصدارت اجلاس میں فیصلہ

پیر جون 18:01

پشاور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) ضلع ناظم پشاورمحمدعاصم خان نے ڈی جی ہیلتھ ڈاکٹر ایوب کے ہمراہ گورنمنٹ میٹرنٹی ہسپتال ہشتنگری کا دورہ کیا اس موقع پر ہسپتال کے ایم ایس نے ضلع ناظم کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ گورنمنٹ میٹرنٹی ہسپتال زچہ و بچہ کیلئے مخصوص ہے اور 24 گھنٹے عوام کو سہولیات دینے کیلئے کھلارہتاہے انہوں نے مزید بتایا کہ ہسپتال میں روزانہ سو کے قریب ڈیلیوری کیسز آتے ہیں ہسپتال میں جدید لیبارٹری ، الٹراسائونڈ اور ایکسرے روم قائم ہے ضلع ناظم پشاورمحمدعاصم خان نے ہسپتال کے مختلف حصوں کا معائنہ کیا اور مریضوں اور انکے لواحقین سے انکو دی جانے والی صحت کی سہولیات کے بارے میں معلومات حاصل کی بعد ازاں ہسپتال میں ضلع ناظم پشاور محمدعاصم خان کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہواجس میں فیصلہ کیا گیا کہ گنجان آباد علاقہ اور پارکنگ کے سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے ہسپتال کے اضافی عملے کو نزدیکی مولوی جی ہسپتال میں شفٹ کیا جائیگا اوراس ہسپتال کو نزدیکی علاقوںسے آئے ہوئے مریضوں کے لیے مخصوص کیاجائیگا جبکہ شہر کے دوسرے علاقو ں سے آئے ہوئے مریضوں کو مولوی جی ہسپتال میں علاج کیلئے بھیجا جائیگا جہاں پر ضلعی حکومت کی جانب سے علاج کی جدیدسہولتیں پہلے ہی سے موجود ہے جہاں پر مریضوں کو راغب کرکے گورنمنٹ میٹرنٹی ہسپتال پر بوجھ کو کم کیاجاسکے گا اس مقصد کیلئے ڈائریکٹر جنرل ہلیتھ ڈاکٹر محمد ایوب کی سربراہی میں چھ رکنی کمیٹی قائم کردی گئی جو کہ دوہفتوں میں اپنی سفارشات ضلع ناظم کو ارسال کریگی اس ضمن میں ضلع ناظم پشاورمحمدعاصم خان کا کہنا ہے کہ اندرون شہر میں قائم مراکز صحت اس وقت کی آبادی کو مدنظر رکھتے ہوئے قائم کئے گئے تھے اب یہ علاقے آبادی زیادہ ہونے اور بے ہنگم تعمیرات کے باعث صحت کی سہولیات کی فراہمی میں رکاوٹیں درپیش ہے ضلعی حکومت کی کوشش ہے کہ اندرون شہر کے کشادہ علاقوں میں مراکز صحت قائم کئے جائیں تاکہ بلاتعطل مریضوں کو صحت کی سہولیات کی فراہمی یقینی بنائے جاسکیں ۔

متعلقہ عنوان :