انگلینڈکے ہاتھوں کلین سوئپ شکست،کینگرو کپتان کا مستعفٰی ہونے کا عندیہ

ون ڈے ٹیم کی قیادت اور کیریئر کے بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتا، ٹیسٹ ٹیم کی قیادت اور طویل فارمیٹ کا کیریئرجاری رکھناچاہتاہوں،جلد اپنے بارے میں کوئی فیصلہ کرلوں گا ،آسٹریلوی کپتان ٹم پائنی

پیر جون 18:22

انگلینڈکے ہاتھوں کلین سوئپ شکست،کینگرو کپتان کا مستعفٰی ہونے کا عندیہ
لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) انگلینڈکے ہاتھوں تاریخ میں پہلی بار پانچ میچوں کی سیریزمیں کلین سوئپ کی خفت سے دوچار ہونے والی آسٹریلوی ٹیم کے نئے کپتان ٹم پائنی نے کرکٹ آسٹریلیا کیلئے نئی مشکل کھڑی کردی ہے جنہوں نے اگلے چند دنوں میں ون ڈے کیریئر اور کپتانی چھوڑنے کے متعلق اہم فیصلہ کرنے کا اعلان کیاہے۔اسٹیون اسمتھ اور ڈیوڈوارنر پر ایک ایک سالہ پابندی عائد ہوجانے کے بعد کرکٹ آسٹریلیا نے ٹم پائنی کو ون ڈے اور ٹیسٹ ٹیم کا کپتان مقرر کیاتھا لیکن اب لگتا ہے کہ آسٹریلیاکو نئے ون ڈے کپتان کی تلاش کیلئے سرگرداں ہونا پڑے گا کیونکہ انگلینڈ کے ہاتھوں بدترین شکست کے بعد ٹم پائنی وائٹ بال کے اپنے کیریئر اور مستقبل کے بارے میں اہم فیصلہ کرنے پر سوچ و بچار کررہے ہیں۔

(جاری ہے)

گزشتہ اتوارکوجوزبٹلر کی شاندار سنچری کی بدولت ایک وکٹ سے فتح حاصل کرنے والی انگلش ٹیم نے آسٹریلیا کے خلاف پانچ،صفر کا کلین سوئپ مکمل کیاتھا۔اس بدترین شکست کے بعد آسٹریلوی کپتان ٹم پائنی بطور ون ڈ ے کپتان اپنے مستقبل کے حوالے سے غیریقینی صورتحال کا شکار ہوگئے ہیں البتہ وہ ٹیسٹ ٹیم کی بدستور قیادت کرنا چاہتے ہیں۔کلین سوئپ سے دوچار ہوجانے کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے 33سالہ ٹم پائنی نے کہاکہ آگے کیا ہوگا، میں کہاں کھڑاہوں گا،اس بارے میں فی الحال نہیں سوچا۔

سب جانتے ہیں کہ میں ون ڈے ٹیم کا کپتان کس طرح اور کن حالات میں بناہوں۔ٹم پائنی کا کہناتھا کہ ون ڈے ٹیم کی قیادت اور کیریئر کے بارے میں تو کچھ نہیں کہہ سکتا البتہ ٹیسٹ ٹیم کی قیادت اور طویل فارمیٹ کا کیریئرجاری رکھناچاہتاہوں۔اب میں جاکر آرام کے دنوں میں اپنے بارے میں کوئی فیصلہ کرلوں گا۔

متعلقہ عنوان :