تاریخی تعلیمی ادارے اسلامیہ کالج کے 2008 میں پبلک سیکٹر یونیورسٹی کی حیثیت حاصل کر لینے کے بعد نئے چیلنجو ں کا سامنا ہونا لازمی امر ہے،اقبال جھگڑا

والدین اپنے بچوں کے ذہنوں میں یہ احساس اجاگر کریں کہ اس پیارے وطن کو امن، سلامتی اور استحکام سے ہمکنار کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہے،گورنرخیبرپختونخوا

پیر جون 19:42

تاریخی تعلیمی ادارے اسلامیہ کالج کے 2008 میں پبلک سیکٹر یونیورسٹی کی ..
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) خیبر پختونخوا کے گورنر انجینئراقبال ظفر جھگڑا نے کہا ہے کہ تاریخی تعلیمی ادارے اسلامیہ کالج کے 2008 میں پبلک سیکٹر یونیورسٹی کی حیثیت حاصل کر لینے کے بعد ،یقینا نئے چیلنجو ں کا سامنا ہونا لازمی امر ہے لیکن اس کے ساتھ ہی ساتھ اس ادارے کو قومی و بین الاقوامی سطح پر وسیع پیمانے پر مقابلے کا ما حول بھی دستیاب ہوا ہے۔

وہ پیرکے روز ادارے کے چھٹے جلسہ تقسیم اسناد کے مو قع پر مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر کل256طلباء و طالبات نے مختلف شعبوں میں پی۔ایچ۔ڈی، ایم۔ فل ، ماسٹرز اور بیچلرزکی ڈگریاں حا صل کیں جن میں سے 26 نے اپنے متعلقہ شعبوں میں نمایاں کارکردگی پر طلائی تمغے حاصل کئے۔۔گورنر نے ادارے کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حبیب احمد کی جا نب سے پیش کی گئی سالانہ کارکردگی رپورٹ کو سراہتے ہو ئے کہا کہ یقینا آج کی شاندار کامیابیوں کے ساتھ ساتھ ما ضی کی کئی ایک کامیابیوں کی بنا پر بھی یہ بات یقین سے کہی جا سکتی ہے کہ اسلامیہ کالج یونیورسٹی مستقبل میں بھی اپنی شاندار تاریخی کامیابیوں کا معیار بر قرار رکھی گی۔

(جاری ہے)

تقریب میں صوبائی وزیرتعلیم پروفیسر ڈاکٹرسارہ صفدر ،طلباء وطالبات اوران کے والدین نے بھی شرکت کی۔۔گورنر نے جو کہ صوبے میں سر کاری شعبے کی یونیورسٹیوں کے چانسلر بھی ہیں یہ بھی واضح کیا کہ یقینا علمی و تحقیقی صلا حیتوں کے بل بوتے فارغ التحصیل طلباء و طالبات پوری انسانیت خا ص طور پر وطن عزیز کی فلاح و ترقی میں نمایاں کردار ادا کر نے کے قابل ہوں گے۔

گور نر نے یہ امر بھی واضح کیا کہ یقینا معیار کا نعم البدل کو ئی چیز بھی نہیں ہو سکتی اور تعلیم کے شعبے میں یہ اعلی مقصد تب ہی حاصل ہو سکتا ہے جب طلباء و طالبات کی کر دار سازی بھی یقینی بنا ئی جا ئے۔ انہوں نے کہاکہ بلا شبہ والدین کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے بچوں کے ذہنوں میں یہ احساس اجاگر کریں کہ اس پیارے وطن کو امن، سلامتی اور استحکام سے ہمکنار کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔

گورنر نے فار غ التحصیل ہو نیوالے طلباء و طالبات کو بھی اس باوقار تار یخی ادارے میں زیر تعلیم رہنے پر مبارکباد دی اور یہ امر بھی یاد دلایا کہ ان کی کامیابیوں میں ان کے والدین بھی برابر کے حصہ دار ہیں کیونکہ انہی کی قربانیوں، حوصلہ افزائی اور مدد و سرپرستی کی بدولت وہ یہ دن دیکھنے کے قابل ہو ئے ہیں۔ گورنر نے انہیں یہ امر بھی یاد دلایا کہ وہ اپنے ادارے، اہل خانہ اور پوری قوم کے احسان مند ہیں اور اس تمنا کا اظہار کیا کہ وہ اسی معیار کے مطابق اس احسان کا صلہ چکانے کے قابل ہو سکیں۔

قبل ازیں یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حبیب احمد نے سالانہ کارکردگی رپورٹ پیش کرتے ہو ئے ادارے کی کامیابیوں پر روشنی ڈالی ۔تقریب میں بڑی تعداد میں مختلف تعلیمی اداروں کے سر براہان، فارغ التحصیل ہو نیوالے طلباء و طالبات اور مختلف شعبوں کی نما ئندہ شخصیات نے شرکت کی۔

متعلقہ عنوان :