اردگان کی جیت کمال اتاترک کے باقیات کی تدفین ہے، مفتی محمدنعیم

الیکشن میں پاکستانی بھی ترک عوام کے طرح ملک کے مستقبل کا بہتر انتخاب کریں ، مہتمم جامعہ بنوریہ

پیر جون 20:09

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) جامعہ بنوریہ عالمیہ کے رئیس وشیخ الحدیث مفتی محمدنعیم نے ترکی انتخابات میں رجب طیب اردوان کی جیت کو خوش آیند قرار دیتے ہوئے کہاکہ اردوان کی ترکی میں اسلام پسندوں کی جیت ہے،ترک عوام نے آج کمال اتاترک کے باقیات کی تدفین کردی ہے،اردگان کی کامیابیاں دنیا بھر کے مظلوم مسلمانوں کی کامیابی ہے، گزشتہ دور میں ترک صدر نے بے لوث ہوکر مظلوموں کی داد رسی کا فریضہ انجام دیا آج دنیا بھر کے مظلوم مسلمان ان کو اپنا مسیحا سمجھتے ہیں،اللہ تعالیٰ تمام مسلم ممالک کو اردگان جیسا حکمران عطاء فرمائے ۔

پیر کو جامعہ بنوریہ عالمیہ سے جاری بیان میں مفتی محمدنعیم نے کہاکہ گزشتہ روز جب ترکی میں انتخابات ہورہے تھے پوری دنیا کی طاقتیں اردگان کو ہرانے میں لگی ہوئی تھیں اس کے باوجود اردگان کو اللہ تعالیٰ نے سرخ رو کیاہے اس کی وجہ ان مظلوموں کی دعا ہے جن کی داد رسی ترک صدر کررہے ہیں ، انہوںنے کہاکہ ترکی میں 95فیصد مسلمان آباد ہیں اس کے باوجود مغربی خوشنودی کے حصول کیلئے سابق حکمران کمال اتاترک نے اسلامی شعائر پر پابندی لگائی اور اسلامی ترکی کو نام نہاد سیکولر ترقی میں بدل دیا ہے،انہوںنے کہاکہ رجب طیب اردگان نے ترکی کو عالم اسلام کے قریب اورنظام کو اسلام کی راہ پرگامزن کیا جس وجہ آج پورا مغرب اردگان کا دشمن بنا ہوا ہے اس کے باوجود وہ اپنے پختہ عزم کے ساتھ جدوجہد میں مصروف ہے اور آج ترکی کے عوام نے اسے پھر سے صدر منتخب کرکے اسلام دشمن طاقتوں کو منہ توڑ جواب دیکر کمال اتاترک کے باقیات کو دفن کردیاہے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ رجب طیب اردگان کی جیت سے ثابت ہوگیا کہ اگر لیڈر مخلص ہو تو عوام اسے تنہا نہیں چھوڑتے ہر حال میں اس کا ساتھ دیتے ہیں ، انہوںنے کہاکہ پاکستان میں الیکشن قریب ہیں ہمیں بھی ماضی سے سبق حاصل کرکے ترکی کی طرح اپنے بہتر مستقبل کا انتخاب کرنا ہوگا

متعلقہ عنوان :