660میگاواٹ کے لکی الیکٹرک تھرکول منصوبے کے مالیاتی امور مکمل ہونے کی دستاویزات پر دستخط

پورٹ قاسم پر لگا ئے گئی1080.9ملین ڈالر کے منصوبے میں تھر کے مقامی کوئلے کے استعمال سے بجلی پیدا کی جائیگی وفاقی وزیر توانائی کی پی پی آئی بی کو تھر کوئلے سے زیادہ سے زیادہ بجلی پیدا کرنے کے لئے منصوبوں پر کام کرنے کی ہدایت

پیر جون 22:19

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) 660میگاواٹ کے لکی الیکٹرک تھرکول منصوبے کے مالیاتی امور مکمل ہونے کی دستاویزات پر دستخط کردیئے گئے ، نگران وزیر توانائی بیرسٹر ظفر علی اور وزارت کے اعلیٰ حکام کی موجودگی میں پی پی آئی بی کے اہم ڈی شاہجہان مرزا اور لکی الیکٹرانک کے چیف ایگزیکٹو آئی ایچ حقی نے فنانشل کلوز کے دستاویزات پر دستخط کئے ۔

660میگاواٹ کا یہ منصوبہ پورٹ قاسم پر لگایا جائے گا جس میں تھر کے مقامی کوئلے کے استعمال سے بجلی پیدا کی جائے گی ۔ منصوبے پر 1080.9ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کی جا رہی ہے ۔ سپر کرٹیکل ٹیکنالوجی کے ذریعے قائم ہونے والے اس منصوبے میں کوئلے کے پلانٹ کو ٹھنڈاکرنے کیلئے سمندری پانی کو استعمال کیا جائے گا ۔ منصوبے سے بجلی کی پیداوار مارچ2021میں شروع ہوگی ۔

(جاری ہے)

پی پی آئی بی نے حکومت پاکستان سے خود مختارضمانت دی ہے ۔ وفاقی وزیر توانائی نے اس موقع پر کہا کہ ملک میں بجلی کی رسد میں اضافے کیلئے اور آمدی ایندھن پر انحصار ختم کر کے مقامی وسائل کو ترجیح دینا ہوگی ۔ انہوں نے پی پی آئی بی کو ہدایت کی کہ وہ تھر کے کوئلے سے زیادہ سے زیادہ بجلی پیدا کرنے کے لئے منصوبوں پر کام کریں ۔انہوں نے پی پی آئی بی کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ادارے نے 15500میگاواٹ کے 37منصوبے مکمل کئے ہیں ۔