ایم ایم اے 28 جولائی کو کراچی میں علمائ کنونشن کے ذریعے سندھ میں اپنی انتخابی مہم کا باقاعدہ آغاز کرے گی، لیاقت بلوچ

عوام نے 25 جولائی کو جمہوریت و سیاست کا گلا گھونٹنے اور ملکی عزت وقار کو دائو پر لگاکر لوٹ مار کرنے والی قیادت کو مسترد کر کے ایم ایم اے کی صادق و امین قیادت کا انتخاب کیا تو نہ صرف ان کے بنیادی مسائل حل بلکہ وطن عزیز اپنے قیام کے حقیقی مقاصد کی منزل کی طرف پیش قدمی کرے گا،مرکزی سیکرٹری جنرل متحدہ مجلس عمل

پیر جون 22:21

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) متحدہ مجلس عمل کے مرکزی جنرل سیکریٹری لیاقت بلوچ نے کہا کہ ایم ایم اے 28 جولائی کو کراچی میں علمائ کنونشن کے ذریعے سندھ میں اپنی انتخابی مہم کا باقاعدہ آغاز کرے گی جس سے مرکزی قائدین خطاب جبکہ شہر کے جید علمائ کرام شرکت کریں گے۔ عوام نے 25 جولائی کو جمہوریت و سیاست کا گلا گھونٹنے اور ملکی عزت وقار کو داو ٴ پر لگاکر لوٹ مار کرنے والی قیادت کو مسترد کر کے ایم ایم اے کی صادق و امین قیادت کا انتخاب کیا تو نہ صرف ان کے بنیادی مسائل حل بلکہ وطن عزیز اپنے قیام کے حقیقی مقاصد کی منزل کی طرف پیش قدمی کرے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایم ایم اے سندھ کے سیکریٹری اطلاعات مجاہد چنا سے ایک ملاقات میں بات چیت کے دوران کیا۔

(جاری ہے)

لیاقت بلوچ نے مزید کہا کہ انتخابات میں جہاں دیگر سیاسی جماعتیں ٹکٹوں پر لڑ رہی ہیں وہاں پر دینی جماعتوں کے اتحاد ایم ایم اے نے باہمی مشاورت کے ساتھ ٹکٹوں کی تقسیم کردی ہے۔ مجلس عمل کے ملک بھر میں 160 امیدوار قومی اسمبلی اور چاروں صوبائی اسمبلیوں کے 413 امیدوار کتاب کے نشان پر حصہ لیں گے۔

اسی طرح 7 فیصد سے زائد خواتین امیدوار براہ راست جنرل سیٹوں پر الیکشن لڑیں گی۔ انہوں نے کہا کہ دینی جماعتوں کا اتحاد و متحدہ مجلس عمل محض ایک انتخابی نہیں بلکہ نظریاتی اتحاد ہے جو نظریہ پاکستان کو فروغ اور دینی اقدار کی حفاظت کرے گا۔اس صورتحال میں خیر کی قوتوں کو لاتعلق رہنے کی بجائے انتخابات میں ایم ایم اے کے دیانتدار نمائندوں کو کامیاب کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ لیاقت بلوچ نے ایم ایم اے سندھ کی قیادت کی جانب سے سب دے پہلے آئینی مشاورت سے ٹکٹوں کی تقسیم کا مرحلہ مکمل کرنے پر مبارکباد دی۔#