راولپنڈی ، سجاد خان کے کاغذات نامزدگی مسترد ، حلقہ پی پی 11کے ریٹرننگ افسر کا فیصلہ کالعدم قرار

الیکشن ٹربیونل اپیلٹ کورٹ راولپنڈی کے جسٹس عباد الرحمان لودھی نے سابق تحصیل ناظم راولپنڈی سجاد خان کے کاغذات نامزدگی چیئرمین یونین کونسل ہونے کی بناپرمستردکئے جانے کے فیصلے کو کالعد قرار دے دیا

پیر جون 22:55

راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) الیکشن ٹربیونل اپیلٹ کورٹ راولپنڈی کے جسٹس عباد الرحمان لودھی نے حلقہ پی پی 11کے ریٹرننگ افسر کی جانب سے سابق تحصیل ناظم راولپنڈی سجاد خان کے کاغذات نامزدگی چیئرمین یونین کونسل ہونے کی بناپرمستردکئے جانے کے فیصلے کو کالعد قرار دے دیا ہے اپیلٹ کورٹ نے پنجا ب لوکل گورنمنٹ آرڈنینس کوکالعدم قراردیتے ہوئے یہ حکم جاری کیاہے جس کے تحت اب پنجاب بھرکے بلدیاتی اداروں کے چیئرمین ،وائس چیئرمین ،میئر،ڈپٹی میئراور یونین کونسلوں کے چیئرمین اوروائس چیئرمین اپنے عہدے سے استعفیٰ دیئے بغیرقومی ا ورپنجاب اسمبلی کاالیکشن لڑسکتے ہیں یاد رہے کہ حلقہ پی پی 11کے ریٹرننگ افسر وسول جج احمد شہزاد گوندل نے سابق تحصیل ناظم راولپنڈی سجاد خان کے کاغذات نامزدگی چیئرمین یونین کونسل ہونے کی بناپرمستردکئے تھے تاہم چیئرمین اوروائس چیئر مین ضلع کونسل ،میئر اورڈپٹی میئرمیونسپل کارپوریشن سمیت یونین کونسلوں کے چیئرمینوں اوروائس چیئرمینوں پرپنجاب لوکل گورنمنٹ آرڈنینس 2013 کے تحت عائدکی گئی پابندی کہ قومی وصوبائی اسمبلی کاالیکشن لڑنے سے قبل اپنے عہدے سے استعفٰی دینے کے فیصلے کو سجادخان کی جانب سے لاہورہائی کورٹ راولپنڈی اوراپیلنٹ ٹریبونل میں رٹ پٹیشن کے ذریعے چیلنج کیاتھا گزشتہ پٹیشن کی سماعت کے موقع پر اپیلٹ ٹربیونل کے جسٹس جناب عبادالرحمن لودھی نے لوکل گورنمنٹ کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیاجس پر اپیلنٹ ٹربیونل کے حکم کے تحت اب سجادخان کے کاغذات نامزدگی بحیثیت امیدوار پنجاب اسمبلی پی پی 11بحال ہوگئے ہیں واضح رہے کہ اس امتیازی قانون کوچیلنج کرنے کاسہراسجادخان کے سرجاتاہے جنہوں نے پورے صوبہ پنجاب کی یونین کونسلوں کے چیئرمینوں اوروائس چیئرمینوں کے لئے لاہورہائی کورٹ راولپنڈی بنچ سے مذکورہ آرڈنینس کی شق منسوخ کروائی ہے۔