کراچی، قومی سیاست میں کراچی نے ہمیشہ ہر اول دستہ کا کام کیا ہے، اسداللہ بھٹو

مگر عالم اسلام کے اس بڑے شہر کو ایک سازش کے تحت بدامنی و لسانیت کے بھینٹ چڑھایا گیا۔ کامیاب ہوکر شہر کی روشنیاں بحال اور کراچی کے دینی و قومی تشخص کو بحال کریں گے،متحدہ مجلس عمل کے مرکزی رہنمائ اور این اے 242 سے نامزد امیدوار

پیر جون 23:16

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) متحدہ مجلس عمل کے مرکزی رہنمائ اور این اے 242پر نامزد امیدوار اسداللہ بھٹو نے کہا ہے کہ قومی سیاست میں کراچی نے ہمیشہ ہر اول دستہ کا کام کیا ہے مگر عالم اسلام کے اس بڑے شہر کو ایک سازش کے تحت بدامنی و لسانیت کے بھینٹ چڑھایا گیا۔ کامیاب ہوکر شہر کی روشنیاں بحال اور کراچی کے دینی و قومی تشخص کو بحال کریں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مچھر کالونی جامعہ صدیقیہ میں مجلس عمل پی ایس 99 کے ذمہ داران و علمائ کرام کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی اسمبلی 99 اور 100 پر نامزد امیدوار ں مولانا غیاث، محمد یونس بارائی ، مہتمم جامعہ مولانا راز محمد خان نے بھی خطاب کیا جبکہ ہر سطح کے ذمہ داران شریک تھے اس موقع پر یکم جولائی کو علمائ کنونشن، 2 جولائی کو نیوسبزی منڈی اور 7 جولائی کو بسم اللہ مارکیٹ میں جلسہ کا اعلان بھی کیا گیا۔

(جاری ہے)

اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ اس وقت ملک و قوم کو بڑے چیلنجز کا سامنا ہے۔ مہنگائی،، بیروزگاری، بجلی بحران کے علاوہ دشمن ہمیں فرقہ واریت و علاقہ جات کی بنیاد پر تقسیم کر کے خانہ جنگی جبکہ مخالفین کراچی سمیت ملک کے اسلامی تشخص کو ختم کر کے اپنے مضموم مقاصد حاصل کرنا چاہتے ہیںجن کو ناکام بنا کر قوم کے اندر اتحاد و یکجہتی کی فضا پیدا کرنا ہر فرد کی ذمہ داری ہے۔

مجلس عمل اسی مشن و پیغام کو آگے لیکر انتخابی میدان میں اتری ہے۔ عوام کادرست فیصلہ اور دینی قوتوں کو آگے کے آگے رکاوٹیں کھڑی نہ کی گئیں تو ایم ایم اے کراچی سمیت ملک بھر سے بھرپور کامیابی حاصل کرے گی۔ مولانا غیاث نے کہا کہ جدوجہد ہمارا کام ہے نتیجہ اللہ کے ہاتھ میں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کارکنان رابطہ مہم تیز کردیں ان شائ اللہ کتاب کی کامیابی یقینی ہے۔ یونس بارائی نے کہا کہ متحدہ مجلس عمل کی دیانتدار قیادت ہی کراچی کے مسائل کو حل اور عوام کے دکھوں کا مداوا کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔#