حیدرآباد، تیزرفتار بس الٹنے کے نتیجے میں 3 افراد جاں بحق ، ڈیڑھ درجن کے قریب زخمی ہو گئے

پیر جون 23:19

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) بڈھانی کے قریب تیزرفتار بس الٹنے کے نتیجے میں 3 افراد جاں بحق جبکہ ڈیڑھ درجن کے قریب زخمی ہو گئے، ہلاک شدگان کی لاشیں اور زخمیوں کو طبی امداد کے لئے سول ہسپتال حیدرآباد منتقل کیا گیا۔ڈھرکی سے کراچی جانے والی مسافر بس حیدرآباد بائی پاس پر بڈھانی تھانہ کی حدود میں تیز رفتار ی کے باعث اچانک الٹ گئی جس کے نتیجے میں تین افراد جاں بحق ہوجبکہ ڈیڑھ درجن کے قریب زخمی ہو گئے، اردگرد کے رہائشی افراد نے اپنی مدد آپ کے تحت امدادی کاروائیاں شروع کیں جبکہ اطلاع ملنے پر پولیس،، ریسکیو ٹیمیں اور دیگر انتظامیہ بھی موقع پر پہنچیں، ہلاک شدگان کی لاشیں اور زخمیوں کو طبی امداد کے لئے سول ہسپتال حیدرآباد منتقل کیا گیا، ہلاک ہونے والوں میں 18 سالہ عابد علی ولد شبیر لغاری، 20 سالہ ریاض علی ولد دلدار لغاری اور سلیم شامل ہیں جبکہ زخمیوں میں محمد سلیم ولد سومار لغاری، ایاز شاہ ولد محی الدین، احمد ولد حبیب اللہ مہر، ساجد علی ولد حاجی غلام لغاری، مختیار ولد محمد اسماعیل جسکانی، اسد ولد ارشاد بھٹی، امام بخش ولد حاجی صادق بوزدار، اقرار علی ولد فتح محمد بوزدار، نجم عالم ولد محمد رمضان سمیجو، خادم حسین ولد عطاء محمد شر، سعید خان ولد رحیم خان، مختیار ولد گل حسن برڑو، محبت ولد ممتاز لغاری اور مسماة سعدیہ پری زوجہ محمد رحیم خان شامل ہیں، ہلاک اور زخمیوں کا تعلق پنجاب اور سندھ کے مختلف اضلاع سے ہے۔

(جاری ہے)

ڈپٹی کمشنر حیدرآباد محمد اسلم سومرو نے سول ہسپتال حیدرآباد کا دورہ کیا اور حادثے کے زخمیوں کی عیادت کی اور انہیں فراہم کی جانے والی طبی امداد کے حوالے سے معلومات حاصل کیں۔