لاڑکانہ میں چیف جسٹس کی برہمی کا سامنا کرنے والے جج نے استعفیٰ دے دیا

چیف جسٹس نے کمرہ عدالت میں ایڈشنل سیشن جج کا موبائل فون اُٹھا کر پھینکا تھا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین منگل جون 11:05

لاڑکانہ میں چیف جسٹس کی برہمی کا سامنا کرنے والے جج نے استعفیٰ دے دیا
لاڑکانہ (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 26 جون 2018ء) : لاڑکانہ میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی برہمی کا سامنا کرنے والے ایڈشنل سیشن جج نے استعفیٰ دے دیا ۔ رواں ہفتے لاڑکانہ میں سیشن کورٹ کے دورے کے موقع پر چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی برہمی کا سامنا کرنے والے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج گل ضمیر سولنگی نے استعفیٰ دے دیا۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج گل ضمیر سولنگی نے اپنا استعفیٰ رجسٹرار سندھ ہائیکورٹ کو بھجوادیا ہے۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج گل ضمیر سولنگی کی جانب سے جمع کروائے گئے استعفے کے متن میں کہا گیا کہ میں 20 مارچ 2017ء سے لاڑکانہ میں ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج کے عہدے پر کام کر رہا ہوں، چیف جسٹس ثاقب نثار نے عدالتی کارروائی کے دوران میری عدالت کا دورہ کیا، اور اس دورے کے دوران برہمی کا اظہار کیا اور میرا موبائل فون اُٹھا کر میز پر پٹخا۔

(جاری ہے)

گل ضمیر سولنگی نے استعفے کے متن میں کہا کہ چیف جسٹس کے دورے کی ویڈیو الیکٹرانک، پرنٹ اور سوشل میڈیا پر دکھائی گئی، جس سے میری ساکھ بری طرح متاثر ہوئی۔ جج گل ضمیر سولنگی کا کہنا تھا کہ ایسے حالات میں، میں اپنی نوکری جاری نہیں رکھ سکتا، لہٰذا اپنے عہدے سے مستعفی ہو رہا ہوں۔ یاد رہے کہ 23 جون کو سیشن کورٹ کے دورے پر چیف جسٹس نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کیا ایسی ہوتی ہیں عدالتیں ؟ کیا ایسے کیسز چلائے جاتے ہیں؟ لاڑکانہ سیشن کورٹ میں کیسز کی سماعت دیکھتے ہوئے چیف جسٹس نے سیشن کورٹ کے ایڈشنل سیشن جج پر بھی برہمی کا اظہار کیا، چیف جسٹس نے لاڑکانہ سیشن کورٹ کے دورے کے دوران میز پر ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج گل ضمیر سولنگی کا موبائل فون دیکھ کر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے موبائل اُٹھا کر پٹخ دیا تھا جبکہ مذکورہ جج کے تبادلے کا بھی حکم دیا تھا۔

چیف جسٹس کے موبائل پٹخنے کی ویڈیو نہ صرف الیکٹرانک میڈیا بلکہ سوشل میڈیا پر بھی کافی گردش میں رہی۔