الیکشن ٹربیونل نے شاہد خاقان عباسی کو انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دے دی

کبھی غیرجمہوری قوتوں سے نہیں ملا، علاقے میں روڈ وفاق، صوبائی اور مقامی حکومتیں بناتی ہیں ،ْ شاہد خاقان عباسی بدقسمتی کی بات ہے کہ قمرالاسلام پی پی10 سے امیدوار تھے، نیب نے انہیں گرفتار کیا ہے،قمرالاسلام کے کاغذات نامزدگی میں نیب کا خط لگا ہوا ہے ،ْمیڈیا سے گفتگو اس طرح کی کارروائی کو پری پول دھاندلی نہ کہیں تو کیا کہیں، قمر الاسلام راجا کو فوری رہا کیا جائے ،ْ سابق وزیر اعظم

منگل جون 12:20

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) الیکشن ٹریبونل نے سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے کاغذات نامزدگی میں منظورکرتے ہوئے انہیں انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دے دی۔ منگل کو الیکشن ٹریبونل اسلام آباد میں شاہدخاقان عباسی کے کاغذات نامزدگی پر سماعت ہوئی۔اس موقع پر شاہدخاقان کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ شاہد خاقان کے کاغذات نامزدگی حلف نامہ نامکمل ہونے پرمسترد کیے گئے،اس حوالے سے ریٹرننگ آفیسر نے اپنے اختیارات سے تجاوز کیا۔

وکیل کا کہنا تھا کہ آر او نے فیصلے میں لکھا کہ حلف نامہ مکمل پر نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے اسے مسترد کیا گیا۔۔الیکشن ٹریبونل نے ریٹرننگ آفیسر کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کو انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت دے دی۔

(جاری ہے)

اس موقع پر سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میں اپنے حلقے سے 8 بار منتخب ہوا، میں نے جو سب سے بہتر سمجھا وہ جواب دیا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے اپنا وقار بلند رکھا،کبھی غیرجمہوری قوتوں سے نہیں ملا، علاقے میں روڈ وفاق، صوبائی اور مقامی حکومتیں بناتی ہیں۔۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ حلقے کی بہتری کیلئے کیا کام کیا، اس بات کا اس سے بہتر جواب نہیں تھا ،ْمیں نے یہی بہتر جواب سمجھا،اب فیصلہ حلقے کے عوام نے کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ بدقسمتی کی بات ہے کہ قمرالاسلام پی پی10 سے امیدوار تھے، نیب نے انہیں گرفتار کیا ہے،قمرالاسلام کے کاغذات نامزدگی میں نیب کا خط لگا ہوا ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ اس طرح کی کارروائی کو پری پول دھاندلی نہ کہیں تو کیا کہیں، قمر الاسلام راجا کو فوری رہا کیا جائے تاکہ وہ الیکشن میں حصہ لے سکیں۔سابق وزیر اعظم کا کہنا ہے کہ میاں نوازشریف نیب میں 100پیشیوں پر حاضر ہوئے ،انصاف نہ صرف ہونا چاہیے بلکہ ہوتا ہوا نظر بھی آنا چاہیے، ویب سائٹ پر اثاثوں کی تفصیل ڈالنا نامناسب ہے۔۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ میں نے اپنے حلقے اور پاکستان کیلئے کام کیا، کبھی کسی آمر کا ساتھ نہیں دیا اور پارٹی سے وفاداری نہیں بدلی۔۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جسے بھِی خرابی نظر آتی ہے مسلم لیگ (ن) میں ہی نظر آتی ہے، الیکشن کی شفافیت پر سوال اٹھ رہے ہیں اور اٹھیں گے۔