پاکستان پیپلز پارٹی بلوچستان کے صدر علی مدد جتک نے عمران خان کو گاڑی دینے کا اعلان کر دیا

کپتان نے اپنے اثاثوں میں ایک بھی گاڑی ظاہر نہیں کی جس پر دُکھ ہوا۔ علی مدد جتک

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین منگل جون 12:42

پاکستان پیپلز پارٹی بلوچستان کے صدر علی مدد جتک نے عمران خان کو گاڑی ..
کوئٹہ (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 26 جون 2018ء) : پاکستان پیپلز پارٹی بلوچستان کے صدر علی مدد جتک نے پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کو گاڑی دینے کا اعلان کردیا۔ نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے رہنما علی مدد جتک نے کہا کہ میں کل ٹی وی میں دیکھ رہا تھا کہ ہمارے ملک کی سیاست کے بڑے بڑے نام اور انتخابی اُمیدوار جو الیکشن لڑ رہے ہیں، ان کی جائیداد سے متعلق تمام تفصیلات سامنے آ گئی ہیں۔

جب میں نے کپتان کے اثاثے دیکھے تو مجھے علم ہوا کہ عمران خان کے پاس کوئی گاڑی نہیں ہے جس کو دیکھ کر مجھے بے حد دُکھ ہوا اور کپتان پر ترس آ گیا۔ علی مدد جتک نے کہا کہ میرے والد کی 78 ماڈل کی گاڑی خراب کھڑی ہے۔ میں بحیثیت بلوچستانی الیکشن کے لیے گاڑی کے ٹائر ڈلوا کر بنی گالہ بھجوادوں گا۔

(جاری ہے)

اگر ٹائر دلوا سکتے ہیں تو ٹھیک ہے ورنہ ہم چندہ اکٹھا کر کے کپتان کو ٹائر بھی ڈلوا دیں گے۔

الیکشن کے بعد عمران خان میری گاڑی واپس کردیں۔ عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے علی مدد جتک نے کہا کہ عمران خان سعودی عرب جانے کے لیے 82 لاکھ سے زائد کا چارٹر طیارہ کر کے جا سکتا ہے لیکن ان کے پاس ایک بھی گاڑی نہیں ہے۔یاد رہے کہ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے الیکشن کمیشن میں جمع کروائے گئے اثاثوں کی تفصیلات سا منے آئیں جن کے مطابق عمران خان نے ذرائع آمدن زراعت، تنخواہ، پنشن اور بینک منافع ظاہر کیا۔

عمران خان 168 ایکڑ زرعی زمین کے مالک ہیں جب کہ عمران خان نے غیر ملکی دوروں کی تفصیلات بھی کاغذات نامزد گی میں ظاہر کیں۔مران خان نے الیکشن کمیشن میں اپنے گزشتہ برس کے اثاثے 47 لاکھ 76 ہزار 611 روپے آمدن ظاہر کیے ۔ عمران خان نے اپنی تنخواہ 18 لاکھ 991 روپے اور زرعی آمدن 23 لاکھ 60 ہزار روپے ظاہر کی۔چیئرمین تحریک انصاف نے اپنے کاغذات میں ظاہر کیا کہ انہوں نے 2015 سے لے کر 2018 تک 28 غیر ملکی دورے کیے ہیں جن میں سے زیادہ تر دورے اسپانسرڈ تھے۔

عمران خان نے گزشتہ سال اپنی آمدن پر ایک لاکھ 3 ہزار 763 روپے ٹیکس ادا کیا ۔انہوں نے اپنی اہلیہ بشری مانیکا اور دو بچوں کو زیر کفالت ظاہر کیا ۔دستاویزات کے مطابق عمران خان کے پاس کوئی ذاتی گاڑی نہیں ہے لیکن زیر استعمال فرنیچر اور دیگر سامان کی مالیت 5 لاکھ اور ان کے پاس موجود جانوروں کی مالیت 2 لاکھ روپے ہے۔ الیکشن کمیشن میں جمع کروائی گئی دستاویزات کے مطابق عمران خان نے اسلام آباد میں اپنے دو غیر ملکی اکانٹس بھی ظاہر کیے ۔

عمران خان نے اپنے ایک اکاؤنٹ میں 3 لاکھ 70 ہزار 760 ڈالر اور دوسرے اکاؤنٹ میں 1470 ڈالر ظاہر کیے ۔ پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی جانب سے جمع کروائی گئی دستاویزات کے مطابق ان کی لاہور اور اسلام آباد سمیت پاکستان میں 14 جائیدادیں ہیں جو انہیں ورثے میں ملی ہیں۔ دستاویزات کے مطابق عمران خان کا پاکستان اور بیرون ملک کوئی کاروبار اور جائیداد نہیں ہے۔