مسلم لیگ( ن) لاہور میں ٹکٹوں کی تقسیم پر اختلافات بدستور برقرار ‘لاہور میں باضابطہ انتخابی مہم شروع نہ کی جاسکی

حمزہ شہبازناراض نون لیگیوں کو منانے کے لیے میدان میں‘ایبٹ آباد سے سردار مہتاب عباسی کا بھی آزاد الیکشن لڑنے کا اعلان

Mian Nadeem میاں محمد ندیم منگل جون 13:53

مسلم لیگ( ن) لاہور میں ٹکٹوں کی تقسیم پر اختلافات بدستور برقرار ‘لاہور ..
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔26 جون۔2018ء) مسلم لیگ( ن) لاہور میں ٹکٹوں کی تقسیم پر اختلافات بدستور برقرار ہیں، جس کی وجہ سے لاہور کے متعدد حلقوں میں باضابطہ انتخابی مہم شروع نہ کی جاسکی۔ذرائع کے مطابق این اے 125میں بلال یاسین اور مخالف ایاز بوبی گروپ کے درمیان ناراضی برقرار، پی پی 161 سے فیصل سیف کھوکھرکوٹکٹ نہ ملنے پر کھوکھر برادران بھی لیگی قیادت سے ناراض ہیں۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ افضل کھوکھر کے بھتیجے کو پی پی 161 پر نوازشریف کے وعدے کے باوجود ٹکٹ جاری نہیں کیا گیا۔ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ این اے 123 سے ملک ریاض اور غزالی سلیم بٹ کے اختلافات بھی برقرار ہیں،جبکہ پی پی147 میں مجتبیٰ شجاع کے مقابلے میں نون لیگ کے اصغر بٹ آزاد امیدوار کے طور پر سامنے آگئے۔

(جاری ہے)

ذرائع نے یہ بھی کہا ہے کہ سہیل شوکت بٹ کو ٹکٹ نہ ملنے پرحامیوں نے روحیل اصغر کی حمایت سے انکار کر دیا۔

دوسری جانب حمزہ شہباز اور کئی اہم لیگی رہنما ناراض کارکنوں کے درمیان صلح کیلئے کوشاں ہیں۔دوسری جانب مسلم لیگ نون کے راہنماءسردار مہتاب عباسی ٹکٹ نہ ملنے پر ناراض ہوگئے ہیں۔مسلم لیگ( ن) الیکشن سے پہلے انتشار کا شکار ہے،،چوہدری نثار،،،زعیم قادری اورچوہدری عبدالغفور کے بعد یک اوردیرینہ ساتھی نےعلم بغاوت بلند کرکے نون لیگ کی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے۔

این اے15 سے ٹکٹ نہ ملنے پر مسلم لیگ نون کے راہنماءسردارمہتاب عباسی ناراض ہوگئے، ان کی جگہ مرتضیٰ عباسی کوٹکٹ دے دیا گیا، جس پر ایبٹ آباد سے نون لیگ کے دیگر چاروں امیدوار پی کے 36سے سردارفرید، پی کے 37 سے سردار اورنگزیب ، پی کے 38 سے ارشد اعوان اور پی کے39سے عنایت خان نے احتجاجاََ ٹکٹ واپس کر دیئے ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ امیرمقام کے کہنے پر سردارمہتاب کو ٹکٹ نہیں دیا گیا۔

گوجرانوالہ میں یوتھ ونگ پارٹی قیادت کیخلاف سراپا احتجاج ہے، مظاہرین نے دھمکی دی ہے کہ گوجرانوالہ کے سٹی صدر شعیب بٹ کو ٹکٹ نہ دیا گیا تو الیکشن کا بائیکاٹ کردیں گے۔یاد رہے کہ گذشتہ روز چکوال میں ٹکٹوں کے اجراءپر ممتاز ٹمن گروپ نے نون لیگ سے علیحدگی کا فیصلہ کیا تھا ، یہ فیصلہ نون لیگ نے سردار ممتازٹمن کو ٹکٹ دے کر واپس لینے پر کیا گیا۔اس سے قبل (ن) لیگ کے خلاف سابق صوبائی وزراء اور مسلم لیگ نون کے راہنماءعبدالغفورمیو اور پر زعیم قادری بھی علم بغاوت بلند کرچکے ہیں جبکہ چوہدری نثارکامعاملہ بھی ن لیگ سے سلجھ نہ سکا۔سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسی صورتحال میں نون لیگ کیلئے انتخابات 2018 کڑاامتحان ثابت ہوسکتا ہے۔