بدعنوانی کے رجحانات کو مدنظر رکھتے ہوئے چیئرمین نیب کا شکایات خود سننے کا فیصلہ

منگل جون 15:48

بدعنوانی کے رجحانات کو مدنظر رکھتے ہوئے چیئرمین نیب کا شکایات خود سننے ..
ہری پور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) معاشرے میں بدعنوانی کے بڑھتے ہوئے رجحانات کو مدنظر رکھتے ہوئے چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال نے عوامی شکایات خود سننے کا فیصلہ کیا اور ساتھ ہی صوبائی ڈائریکٹر جنرلز کو بھی ہدایت کی ہے کہ عوامی شکایات خود سنیں۔ تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹر جنرل نیب خیبر پختونخوا 28 جون 2018ء بروز جمعرات دوپہر دو سے چار بجے تک عوام کی شکایات دفتر نیب خیبر پختونخوا میں براہ راست سنیں گے۔

اس موقع پر کمپلینٹ سکروٹنی کمیٹی کے تمام ممبران بھی ڈائریکٹر جنرل کے ہمراہ ہوں گے جس کیلئے عوام کا تعاون درکار ہے۔ اس ضمن میں اگر کسی سرکاری اہلکار نے جان بوجھ کر ناجائز طریقہ سے کسی شخص کو سرکاری خزانہ سے فائدے پہنچایا ہو، یا ایسا شخص یا اشخاص جس نے عوم الناس سے دھوکہ دھی اور منافع کا لالچ دیکر رقم وصول کر کے خورد برد کر لی ہو، ایسے اشخاص جو زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ملک سے باہر جانے کا جھانسہ دے رہے ہوں، کوئی ادارہ یا سوسائٹی جو ایک سے زیادہ اشخاص کو پلاٹ دینے کے لئے سکیم بنائے اور رقم خرد بردکرے، بینک کے حکام سے ملکر بینک فراڈ میں ملوث افراد، سرکاری کام کیلئے رشوت طلب کر نے والے اور دھوکہ دہی سے قرض دلوانے والوں کے خلاف شکایات سنیں گے۔

(جاری ہے)

شکایت کنندہ کیلئے ضروری ہے کہ وہ اپنی شکایت تحریری شکل میں ہمراہ شناختی کارڈ کی کاپی اور ابتدائی ثبوتوں کے ساتھ نیب آفس پشاور تشریف لائیں۔ اس موقع پر ڈائریکٹرجنرل فرمان الله خان نے کہا کہ تمام شکایات پر تحقیقات انتہائی شفاف طریقہ سے ہو گی اور ملزمان کو قانون کے مطابق سزا دی جائے گی۔

متعلقہ عنوان :