مون سون کی بارشوں کے دوران کپاس کی خصوصی حفاظت کریں، زرعی ماہرین

منگل جون 15:54

فیصل آباد۔26 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) کپاس کے کاشتکاروں کو مون سون کی بارشوں کے دوران کپاس کی خصوصی حفاظت کی ہدایت کردی ہے، 24گھنٹے سے زیادہ وقت تک بارش کا پانی کپاس کے کھیت میںجمع رہنے سے فصل کی نشوونما رک جاتی ہے اور 48گھنٹے تک پانی رہنے سے پودے مرجھانا شروع ہوجاتے ہیں لہٰذا کپاس کے کاشتکار فصل کو مون سون کی بارشوں اور زیادہ پانی کے نقصان سے بچانے کیلئے کھیت میں موجودپانی فوری کسی نچلے کھیت میں نکال دیں اور اگر قریب ہی کماد یا چارے کی فصل موجود ہو تو اضافی پانی ان کھیتوں میں ڈا ل دینا چاہیے تاکہ کپاس کی فصل کو نقصان سے بچایاجاسکے۔

ماہرین زراعت نے بتایاکہ اگر کسی وجہ سے کپاس کے کھیت سے پانی نکالنا ممکن نہ ہو تو کھیت کے ایک طرف لمبائی کے رخ کھائی کھود کر پانی اس میں جمع کردینا چاہیے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ معمولی سی توجہ کاشتکاروں کو مالی نقصان سے بچاسکتی ہے۔ انہوںنے کہا کہ کپاس کی بہتر فصل کے حصول اور مناسب نشو ونما کیلئے مقررہ کھادوں کا بر وقت استعمال اور جڑی بوٹیوں کی تلفی بھی ضروری ہے جبکہ فصل میں مفید کیڑوں سے دشمن کیڑوں پر کنٹرول کرنا بھی ممکن بنایا جاسکتا ہے۔

انہوںنے کہا کہ کپاس میں کرائی سوپرلا اور ٹرائیکوگراما کے کارڈ لگا کر مفید کیڑوںکی تعداد بڑھا کر نہ صرف فصل کے دشمن کیڑوں کومؤثر طور پر کنٹرول کیا جاسکتا ہے بلکہ اس سے ماحول کو آلودہ ہونے سے بھی بچایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نباتاتی جوئیں سفید مکھی تھرپس اور دیگر رس چوسنے والے کیڑوںکی پہچان ضروری ہے تاکہ ان کا بروقت تدارک کیا جاسکے۔

انہوں نے کہا کہ کھیت سے جڑی بوٹیوں کی تلفی اور پودوں کی بہتر نشوونما کیلئے مناسب کھادوں کا استعمال و اجزائے صغیرہ زنک ، بوران، میگنیشیم سلفیٹ کا سپرے وائرس کے اثرات کو ختم کرسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہفتہ میں دو بار پیسٹ سکاؤٹنگ کر کے معاشی حد کو مد نظر رکھ کر سپرے مشین میں ہالوکون نوزل لگا کر پودوں کے ہر حصے پر صبح و شام سپرے کیا جائے تاکہ بہتر پیداوار اور صحت مند فصل حاصل ہوسکے۔

متعلقہ عنوان :