پشتون اور بلوچ قوم پرست جب اقتدار میں ہوتے ہیں تو ان کو عوام کے حقوق یاد نہیں آتے ہیں،منظور خان کاکڑ

ہماری پارٹی صوبے میں حکومت قائم کرے گی،سیاسی پارٹیاں25جولائی کے بعدبھاپ بن کے ہوا میں اڑجائیں گی،پریس کانفرنس

منگل جون 19:22

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) بلوچستان عوامی پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل منظور خان کاکڑ نے کہاہے کہ پشتون اور بلوچ قوم پرست جب اقتدار میں ہوتے ہیں تو ان کو بلوچستان کے عوام کے حقوق یاد نہیں آتے ہیں تو جب وہ اقتدار سے فارغ ہوتے ہیں تو انہیں بلوچستان کے حقوق یاد آتے ہیں ،،بلوچستان کے عوام باشعور ہوچکے ہیں ،آنیوالے عام انتخابات میں ہماری پارٹی بھاری اکثریت سے کامیاب ہوگی ،انہوں نے یہ بات منگل کے روز کوئٹہ پریس کلب میں مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر اور ممتاز قبائلی وسیاسی رہنماء ملک یاسین کاکڑ کی سینکڑوں ساتھیوں سمیت بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کے موقع پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی ،منظور کاکڑنے کہاکہ ہمیں خوشی ہورہی ہے کہ ملک مہترزئی کاکڑ کا گھرانہ ہمیشہ پاکستان کے کارواں کیساتھ چلتا آرہاہے اور انکے گھرانے نے ہمیشہ بلوچستان کی عوام کی حقوق کیلئے جدوجہد کی ہے ،انہوںنے کہاکہ یہ بات میری سمجھ سے بالاتر ہے کہ جب صوبے میں پشتون یا قوم پرستوں کی حکومت ہوتی ہے تو انکو اس وقت بلوچستان کے حقوق یاد نہیں آتے تو جب اقتدا سے چلے جاتے ہیں تو انہیں یاد آجاتے ہیں ،،بلوچستان میں رہنے والے پشتون ،بلوچ ،سیٹلر اور ہزار سب بھائی ہیں ،ہمارے درمیان کوئی اختلاف نہیں کچھ عناصر ہمارے درمیان اختلافات پیدا کرنے کی جو کوشش کررہے ہیں وہ کبھی بھی کامیاب نہیں ہوں گے بلوچ اپنی زمین پر آباد ہے اور پشتون اپنی زمین پر آباد ہے کوئی کسی کا حق نہیں کھا رہاہے ،ہمارے سارے وسائل اکھٹے ہیں جسے ہم ملکر کھارہے ہیں ،کوئی کسی کا حق نہیں کھا رہاہے ،انہوں نے کہاکہ جب بھی بلوچستان میں پشتون یا بلوچ قوم پرستوں کی حکومت بنتی ہے تو وہ اپنے اپنے مفادات حاصل کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں جب اقتدار سے الگ ہوتے ہیں تو وہ دوسروں پر تنقید کرتے ہیں ،منظور کاکڑ نے کہاکہ بلوچستان عوامی پارٹی کے سربراہ جام کمال کی قیادت میں روز بروز ترقی کررہی ہے اور انشاء اللہ آنیوالے انتخابات میں ہم ایک مضبوط پارٹی بن کر سامنے آئیں گے ،انہوں نے ایک بلوچ قوم پرست پارٹی پر شدید نقطہ چینی کرتے ہوئے کہاکہ انہوں نے اس پارٹی کے سربراہ نے ہماری پارٹی پر جو تنقید کی ہے افسوسناک بات ہے ہماری پارٹی 25اگست کے بعد بھی بلوچستان میں قائم ودائم رہیں گی اور صوبے میں حکومت قائم کرے گی وہ پارٹیاں ضرور 25اگست کے بعد بھاپ بن کے ہوا میں اڑجائیں گی جن کی کوئی زمین نہیں ہے اور نہ ہی عوا م انکے ساتھ ہیں ،25جولائی کو عام انتخابات مقرر ہ وقت پر ہورہے ہیں اس وقت معلوم ہوگا کہ بھاپ بن کر ہوا میں کون اڑجائیگا او رکون صوبے میں حکومت بنائے گا،ہم کبھی بھی ذاتیات پر تنقید نہیں کرتے ہیں اصولوں کی سیاست کی ہے اور آئندہ بھی کرتے رہیں گے ،اس سے قبل ممتاز قبائلی وسیاسی رہنماء ملک یاسین کاکڑ نے کہاکہ ان کا تعلق بلوچستان مسلم لیگ (ن) سے ہے وہ پارٹی کے نائب صدر رہے مگر افسوس کی بات ہے کہ وہ لوگوں کے مسائل حل کرنے میں ناکام رہے ہیں اور بلوچستان کے عوام کے مسائل پر توجہ نہیں دی ہیں ،انشا ء اللہ ہم بلوچستان میں صدیوں سے بھائیوں کی طرح رہ رہے ہیں اور آئندہ بھی رہیں گے ،اور منظورخان کاکڑ کی قیادت میں بلوچستان عوامی پارٹی مزید مضبوط ہوگی اور ہم سب ملکر بلوچستان کی ترقی وخوشحالی کیلئے کام کریں گے۔

متعلقہ عنوان :