لاہور ہائیکورٹ نے فیس بک پر جعلی اکاؤنٹس کے عام انتخابات پر اثر انداز ہونے کے خدشے اور اس کے تدارک کے لیے تجاویز پر پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن کو نوٹس جاری کردیا

منگل جون 19:43

لاہور۔26 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے فیس بک پر جعلی اکاؤنٹس کے عام انتخابات پر اثر انداز ہونے کے خدشے اور اس کے تدارک کے لیے تجاویز پر پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن کو نوٹس جاری کر دیا۔۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ نے مقامی وکیل شاہد جمال کی درخواست پر سماعت کی جو فیس بک کے سی ای او مارک زکربرگ کے بیان کو بنیاد بنا کر دائر کی گئی۔

درخواست گزارکے وکیل نے بتایا کہ مارک زکربرگ اپریل 2018ء کو امریکی سینیٹ کمیٹی برائے کامرس، سائنس اور ٹرانسپورٹیشن کے سامنے پیش ہوئے اور یہ اعتراف کیا کہ جعلی فیس بک اکاؤنٹس پاکستان کے انتخابات پر اثر انداز ہو سکتے ہیں۔ درخواست گزار نے نکتہ اٹھایا کہ الیکشن کمیشن کی یہ ذمہ داری ہے کہ ملک میں شفاف انتخابات ہوں اور اس کیلئے اقدامات کرے۔

(جاری ہے)

درخواست گزار کے وکیل نے خدشہ ظاہر کیا کہ عام انتخابات کے نتائج فیس بک پر جعلی اکائوئنٹس کی وجہ سے متاثر ہوسکتے ہیں اس لیے فیس بک کے جعلی اکاوئنٹس کیخلاف کارروائی کی جائے تاکہ شفاف اور غیرجانبدارانہ انتخابات کو یقینی بنایا جا سکے۔ درخواست گزار نے استدعا کی کہ وفاقی حکومت اور الیکشن کمیشن کو جمہوری رویوں کی ترویج کے لیے سوشل میڈیا ریگولیٹ کرنے کا حکم دیا جائے اور جعلی فیس بک اکاؤنٹس ختم کرنے والے کے لیے مارک زکربرگ سے رابطے کی ہدایت کی جائے ۔